ترک شہری امریکہ سے متنفر ہو رہے ہیں،

20فیصد ترک شہریوں کو امریکہ پر اعتماد،سروے رپورٹ مغربی ممالک مشرق وسطی میں بد نیتی پر مبنی پلان کا حصہ بننے سے پرہیز کریں،ترک وزیر اعظم بن علی یلدرم

جمعہ جون 15:11

انقرہ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 جون2018ء) ترک وزیر اعظم بن علی یلدرم نے ایک سروے رپورٹ کے حوالے سے کہا ہے کہ ترک شہری امریکہ سے متنفر ہو رہے ہیں، صرف 20فیصد ترک شہریوں کو امریکہ پر اعتماد ہے، مغربی ممالک مشرق وسطی میں بد نیتی پر مبنی پلان کا حصہ بننے سے پرہیز کریں۔بین الاقوامی میڈیا کے مطابق سروے رپورٹوں میں انکشاف ہوا ہے کہ ترک شہریوں کا 20 فیصد سے بھی کم حصہ امریکہ پر اعتماد رکھتا ہے، رائے عامہ میں امریکہ کا تائثر کم ترین سطح پر گر گیا ہے۔

ترکی کے وزیر اعظم بن علی یلدرم نے مغربی ممالک کو متنبہ کیا ہے کہ وہ مشرق وسطی میں بد نیتی پر مبنی کسی پلان کا حصہ بننے سے پرہیز کریں۔یلدرم نے ایک پرائیویٹ ٹیلی ویژن چینل پر جاری کردہ بیانات میں دہشتگردی کے خلاف جدوجہد کے موضوع پر بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ عراق کے شمال میں 400 کلو میٹر کے علاقے میں دہشت گردوں کی صفائی کا آپریشن کیا گیا ہے اور ہمارے فوجی کاروائیوں کو جاری رکھے ہوئے ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا ہے کہ فضائی آپریشنوں کے ساتھ قندیل کے علاقے میں علیحدگی پسند دہشت گرد تنظیم PKK کے دہشت گردوں پر بمباری کی گئی ۔ فرار کی راہ نہ پا کر دہشتگرد پہلے ایران کی طرف اور وہاں سے عراق کی طرف نکل گئے ہیں ۔قندیل کے لئے سرحد پار آپریشنوں کے بارے میں بات کرتے ہوئے وزیر اعظم بن علی یلدرم نے کہا ہے کہ اس موضوع پر ہمارا ایران کے ساتھ کوئی مسئلہ نہیں ہے۔

امریکہ کے ساتھ تعلقات کا بھی ذکر کرتے ہوئے وزیر اعظم نے کہا کہ سروے رپورٹوں کے مطابق ترک شہریوں کا 20 فیصد سے بھی کم حصہ امریکہ پر اعتماد رکھتا ہے ۔ رائے عامہ میں امریکہ کا تائثر کم ترین سطح پر گر گیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ صورتحال نہایت خراب ہے لیکن جب اس کی اصلاح کی طرف دیکھا جائے تو اصلاح کا کام ہماری نہیں امریکہ کی ذمہ داری ہے۔شام کے علاقے منبچ کے موضوع پر ترکی اور امریکہ کے درمیان اتفاق رائے پر بات کرتے ہوئے بن علی یلدرم نے کہا کہ یہ ایک اچھی پیش رفت ہے بصورت دیگر زیادہ کشیدہ اور سخت مقابلہ ہو سکتا تھا۔

انہوں نے کہا کہ اس کے علاوہ مشرق وسطی میں مغربی ممالک کردوں کو اکسا رہے ہیں اور انہیں استعمال کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ مشرق وسطی میں بد نیتی پر مبنی منصوبوں پر عمل پیرا ہونے کے بارے میں مغربی ممالک کو متنبہ کرتے ہوئے کہتا ہوں کہ اس کوشش سے باز رہیں۔