زمبابوے: انتخابی مہم کے دوران صدر ایمرسن کی ریلی میں دھماکہ ،متعدد افراد زخمی ، صدر محفوظ رہے

ہفتہ جون 22:29

ہرا رے (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 جون2018ء) زمبابوے کے صدر ایمرسن منینگیگوا کی ریلی میں دوران خطاب دھماکے سے کئی افراد زخمی ہوگئے تاہم صدر محفوظ رہے۔غیرملکی خبر رساںادارے کی رپورٹ کے مطابق ایمرسن منینگیگوا بلاوایو میں ایک اسٹیڈیم میں صدارتی مہم کے سلسلے میں ایک ریلی سے خطاب کررہے تھے کہ دھماکا ہوا جہاں متعدد افراد زخمی ہوئے۔خیال رہے کہ زمبابوے میں اگلے ماہ صدارتی انتخابات ہورہے ہیں جس کے سلسلے میں ملک میں انتخابی مہم جاری ہے۔

عینی شاہدین کا کہنا تھا کہ دھماکا اس وقت ہوا جب ایمرسن منینگیگوا اپنی تقریر ختم کر کے واپس جارہے تھے۔زمبابوے کے صدر ایمرسن منینگیگوا کے ترجمان جارج چمارامبا نے مقامی اخبار سے بات کرتے ہوئے کہا کہ تفتیش جاری ہے۔یاد رہے کہ ایمرسن منینگیگوا نے گزشتہ سال نومبر میں فوجی مداخلت کے دباو پر سابق صدر رابرٹ موگابے کے استعفے کے بعد عبوری طور پر صدر کا عہدہ سنبھال لیا تھا۔

(جاری ہے)

زمبابوے میں 30 جولائی کو موگابے کے بغیر پہلی مرتبہ صدارتی انتخاب ہوگا جہاں 1980 میں ا?زادی کے بعد موگابے مسلسل حکمران رہے ہیں۔۔افریقہ کے ہی ایک اور ملک ایتھوپیا میں بھی اس واقعے سے چند گھنٹوں قبل نو منتخب وزیراعظم کی ایک بڑی ریلی کے دوران دستی بم کا دھماکا ہوا جہاں ایک شخص جاں بحق اور بھگدڑ کے نتیجے میں 80 سے زائد افراد زخمی ہو گئے۔منتظمین کے مطابق دستی بم کے حملے کا نشانہ وزیراعظم ابی احمد تھے، وزیراعظم ابی احمد نے بھی اس ریلی میں دھماکے کی تصدیق کی تھی۔

ایتھوپیا کے شہر ادیس آبابا میں منعقدہ ریلی میں ہزاروں افراد شریک ہو کر اپنے اصلاحات پسند وزیراعظم کو اپنی حمایت کا یقین دلانا چاہتے تھے۔دھماکے کے بعد شدید بھگدڑ مچ جانے کی وجہ سے 80 سے زائد افراد زخمی ہوگئے۔۔