سرگودھا ‘قومی شاہراہ موٹرویز اور ہائی ویز پر قائم ہوٹلز اورریسٹورنٹس کی کڑی چیکنگ کا حکم دے دیا گیا

جمعہ مارچ 13:22

سرگودھا ‘قومی شاہراہ موٹرویز اور ہائی ویز پر قائم ہوٹلز اورریسٹورنٹس ..
سرگودھا(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 22 مارچ2019ء) کھانے پینے کی اشیاء کے معیار کو بہتر بنانے اور اشیاء کی کوالٹی کنٹرول کے لئے قومی شاہراہ موٹرویز اور ہائی ویز پر قائم ہوٹلز اورریسٹورنٹس کی کڑی چیکنگ کا حکم دے دیا گیا جبکہ تمام سیاحتی مقامات پر کھانے پینے کی اشیاء کے معیار کو بھی چیک کیا جائے گااور غیر معیاری کھانا فراہم کرنے والے ہوٹلز اور ریسٹورنٹس مالکان کے خلاف بلاامتیاز کارروائی کی جائے گی۔

زرائع کے مطابق کھانے پینے کی اشیاء کی عوام کو بہتر فراہمی کے لئے اعلی سطح اجلاس میں کہا گیا ہے کہ غیر معیاری کھانے فروخت کرنے وا لے عناصر کسی رعایت کے مستحق نہیں۔اس لئے ایسے عناصر کے خلاف قانون کے تحت بلاتفریق کارروائی کی جائے گی۔اس سلسلہ میں جاری احکامات میں ہفایت کی گئی ہے کہ موٹر ویز،ہائی ویز اور سیاحتی مقامات پر ہوٹلوں اور ریسٹورنٹ پر مہیا کئے جانے والی کھانے پینے کی اشیاء کی کڑی چیکنگ کی جائے اور غیر معیاری کھانا فراہم کرنے والے ہوٹلز اور ریسٹورنٹس سمیت کاروائی کرتے ہوئے ملاوٹ مافیا کے خلاف جاری مہم میں کوئی دباؤ خاطر میں نہ لایا جائے اور دودھ میں ملاوٹ کے خاتمے کے لئے جامع لائحہ عمل مرتب کر کے دودھ میں ملاوٹ کے خاتمے کے لئے پاسچائزیشن قوانین کے نفاذ کو یقینی بنایا جائے۔

(جاری ہے)

کیونکہ پاسچائزیشن کا قانون چھوٹے مویشی پال فارمر کیلئے دودھ کے اچھے نرخ کی صورت میں خوشحالی لے کر آئے گااورصحت مند خوراک کی فراہمی یقینی بنا کر ہسپتالوں میں رش کم کیا جا سکتا ہے۔بتایا گیا ہے کہ حکومت پنجاب نے کہا ہے کہ عوام کے مفاد کے سامنے کسی دباؤ کو خاطر میں نہیں لایا جائے گااس لئے نئے پاکستان میں ملاوٹ مافیا کی کوئی جگہ نہیں۔حکومت کی طرف سے ملاوٹ کے سدباب اور فوڈ سیفٹی کے امور کے حوالے سے دیگر صوبوں کو بھی مکمل معاونت فراہم کی جائے اور پنجاب فوڈ اتھارٹی میں قانونی اور انتظامی اصلاحات لاکر ادارے کو مزید مضبوط بنائیں گے۔ڈی جی فوڈ اتھارٹی نے بتایا کہ گزشتہ 6ماہ میں سوا لاکھ فوڈ پوائنٹس کی چیکنگ اور 3ہزار سے زائد کو سیل کیا گیا ہے ۔