Live Updates

پاکستان میں کرونا وائرس کیسز رپورٹ ہونے کے بعد لوگ تشویش میں مبتلا، وہ چند احتیاطی تدابیر جنہیں اختیار کر کے اس خطرناک وائرس سے بچا جا سکتا ہے

ماہرین کے مطابق صابن سے ہاتھ اچھی طرح دھونا ضروری ہے، کھانسی اور چھینک آنے پر چہرے کو ڈھانپنا چاہیے، چہرے پر ماسک پہنا جائے

بدھ فروری 22:54

پاکستان میں کرونا وائرس کیسز رپورٹ ہونے کے بعد لوگ تشویش میں مبتلا، ..
لاہور (اردو پوائنٹ اخبار تازہ ترین 26 فروری 2020) پاکستان میں کرونا وائرس کیسز رپورٹ ہونے کے بعد لوگ تشویش میں مبتلا، وہ چند احتیاطی تدابیر جنہیں اختیار کر کے اس خطرناک وائرس سے بچا جا سکتا ہے، ماہرین کے مطابق صابن سے ہاتھ اچھی طرح دھونا ضروری ہے، کھانسی اور چھینک آنے پر چہرے کو ڈھانپنا چاہیے، چہرے پر ماسک پہنا جائے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان میں کرونا وائرس کے کیسز رپورٹ ہونے کے بعد لوگ تشویش میں مبتلا ہیں۔

لوگوں یہ جاننے کی کوشش کر رہے ہیں کہ کرونا وائرس کیسے پھیلتا ہے اور اس سے کیسے بچا جا سکتا ہے۔ اس حوالے سے ماہرین کا کہنا ہے سب سے پہلے یہ بات ذہن میں رکھنے کی ضرورت ہے کہ کرونا وائرس جانور سے انسان اور انسان سے انسان میں منتقل ہونے کی صلاحیت رکھتا ہے، اور نزلے کی صورت میں ظاہر ہوتا ہے۔

(جاری ہے)

یہ بیماری چھینکنے یا کھانسی کرنے سے پھیل سکتی ہے۔

جس کی وجہ بلغم یا تھوک کا منہ سے باہر نکلنا ہے۔ سائنس دانوں کے مطابق کھانسی اور چھینک کئی فٹ تک کا سفر کرنے کے ساتھ ساتھ 10 منٹ تک ہوا میں رہ سکتی ہے۔ جس سے دوسرے لوگ بھی متاثر ہوسکتے ہیں۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ لوگ چند احتیاطی تدابیر اختیار کر کے کرونا وائرس سے محفوظ رہ سکتے ہیں۔ متواتر ہاتھ دھو کر، گرم پانی سے نہا کر اور منہ پر ماسک پہنے رکھنے سے کرونا وائرس کا شکار ہونے سے بچا جا سکتا ہے۔

دوسری جناب ابھی تک یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ فضاء میں کرونا وائرس کتنی دیر تک زندہ رہتا ہے۔ تاہم دوسرے وائرسز کی عمر چند منٹوں سے لیکر کئی ماہ تک ہوتی ہے۔ کرونا وائرس کی منتقلی کی وجہ کسی بھی متاثرہ شخص کا سفر کرنا ہے۔ جس سے وائر س ایسے علاقے میں بھی منتقل ہو سکتا ہے جہاں اس کا وجود نہیں ہے۔ کرونا وائرس کی علامات متاثرہ شخص کو 14 دن بعد ظاہر ہونا شروع ہوتی ہیں۔

الجزیہ کی رپورٹ کے مطابق یہ وائرس اپنی علامت ظاہر کرنے سے قبل ہی منتقل ہونے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ دیگر آنیو الے وائرس کرونا وائرس سے کم رفتار میں پھیلتے ہیں اور کم لوگوں کی اموات کا باعث بنتے ہیں۔ کسی بھی وائرس سے اموات کی شرح 2.4 فیصد ہے تاہم 2003 سے 2004 کے درمیاں پھیلنے والا کرونا وائرس متاثرہ 9.6 فیصد افراد کی موت کا باعث بنا۔ واضح رہے کہ کرونا وائرس سے دنیا بھر میں سینکڑوں افراد ہلاک ہو چکے ہیں، جبکہ اب پاکستان میں بھی اس وائرس کے 2 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں۔
کرونا وائرس کی تباہ کاریاں سے متعلق تازہ ترین معلومات

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :