ہارس ٹریڈنگ سے منتخب سینیٹرز، چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کا کیا بنے گا

تحریک انصاف کا سینیٹ انتخابات میں ہارس ٹریڈنگ میں ملوث اراکین اسمبلی کو پارٹی سے نکالنے پر خواجہ آصف کا سوال

بدھ اپریل 22:52

اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ بدھ اپریل ء) وفاقی وزیر خارجہ خواجہ آصف نے پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے سینیٹ انتخابات میں ووٹ بیچنے والوں کو پارٹی سے نکالنے کے اعلان کے بعد سوال اٹھایا ہے کہ ان ارکان اسمبلی کے ووٹوں سے منتخب ہونے والے سینیٹرز کا مستقبل کیا ہوگا۔سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری بیان میں خواجہ آصف نے کہا کہ ’یہ بتایا جائے ان ووٹوں سے منتخب ہونے والے سینیٹرز، چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کا کیا بنے گا‘۔

عمران خان کی نیوز کانفرنس کے بعد وزیرخارجہ خواجہ آصف نے مزید کہا کہ سینیٹ الیکشن کا ساراعمل شروع سے ہی غلط تھا۔ واضح رہے کہ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان نے اسلام آباد میں پارٹی رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئیسینیٹ الیکشن میں ووٹ بیچنے والے اراکین قومی اسمبلی کو پارٹی سے نکالنے کا اعلان کر دیا ہے۔

(جاری ہے)

عمران خان کا کہنا تھا کہ خیبر پختونخوا اسمبلی میں ہمارے 60 اراکین ہیں اور پارٹی تحقیقات کے مطابق 20 اراکین نے اپنے ووٹ بیچے اور وہ وہ لوگ سینیٹ الیکشن میں کامیاب ہوئے جن کے بارے میں تصور بھی نہیں کیا جا سکتا تھا۔

جن ارکان نے ووٹ بیچا انہیں شوکاز نوٹس جاری کر رہے ہیں، اگر یہ اراکین مطمئن نہ کر سکے تو انہیں نا صرف پارٹی سے نکالیں گے بلکہ ان کے نام نیب کو بھی بجھوائیں گے۔

Your Thoughts and Comments