Firm Ka Malik

فرم کا مالک

ایک فرم کے مالک نے اپنے دفتر کے تمام کمروں کی دیواروں پر تختی آویزاں کرا دی جس پر لکھا تھا۔ ”جو کچھ کرنا ہے آج کرلو۔ “ ایک مہینہ کے بعد ایک دوست نے فرم کے مالک سے پوچھا۔ ”ملازموں پر اس کا کیا اثر ہوا؟“ فرم کے مالک نے جواب دیا۔ ”خزانچی تیس ہزار روپے لے کر بھاگ گیا۔ تین کلر کوں نے اپنی تنخواہوں میں اضافے کا فوری مطالبہ کر دیا اور چپڑاسی نے تو حد ہی کر دی۔ اس نے ایک ڈاکوؤں کے گروہ سے مل کر ۔۔۔کے راز اگل دئیے۔ “

Your Thoughts and Comments