Stage - Joke No. 922

سٹیج - لطیفہ نمبر 922

مقامی آڈیٹوریم میں ایک ڈرامہ سٹیج کیاجا رہا تھا۔ ڈرامے سے اکتا اکتا کر لوگ جا رہے تھے‘ بیچ بیچ میں لوگ فقرے بھی لگا رہے تھے۔ آخر خدا خدا کرکے ڈرامے کے اختتام کا وقت آیا اور ہیرو نے ہیروئن کو غنڈوں کے چنگل سے چھڑایا۔ غنڈوں کو مار بھگانے کے بعد ہیروہیرون کی طرف متوجہ ہوا جو ڈرامے کے اعتبار سے بے ہوش تھی۔ ”طاہرہ …طاہرہ!“ ہیرو ہیروئن کے قریب آ کر بولا۔ ”میری پیار طاہرہ ! آنکھیں کھولو … دیکھو میں نے سارے غنڈوں کو بھگا دیا ہے۔ اب تم غنڈوں میں گھری طاہرہ نہیں ہو… آنکھیں کھولو۔ دیکھو میں نے سب کو بھگا دیا ہے۔“ کیوں جھوٹ بولتے ہو یار…! ہال سے آواز آئی۔ ”میں ابھی یہاں بیٹھا ہوا ہوں۔“

مزید لطیفے

جواب

jawab

ٹارزن کے آخری الفاظ

Tarzan Ke Akhri Alfaz

مالک نوکر سے

malik nokar se

کامران دکان دار سے

Kamran dukaan daar se

مریض ڈاکٹر سے

mareez doctor se

خریدار

kharidaar

مرغی

murghi

بھکاری

bhikari

نرس نے شوہر

Nurse ne shohar

طوطلا آدمی

Totla Admi

استاد شاگرد سے

Ustad Shagird se

ایک بال کی جگہ

aik baal ki jagah

Your Thoughts and Comments