Wakeel - Joke No. 1116

وکیل - لطیفہ نمبر 1116

ایک دن شہر کے مشہور وکیل اپنی بڑی سی گاڑی میں ایک سڑک سے گذرے۔ قریب ہی دیکھا کہ دو افراد بیٹھے سڑک کے کناروں پر لگی ہوئی گھاس اکھاڑ اکھاڑ کر کھا رہے ہیں۔ وہ بڑا حیران ہوا۔ اس نے تیزی سے گاڑی رکوائی تا کہ چھان بین کر سکے۔ دریافت کرنے پر معلوم ہوا کہ وہ لوگ بے حد غریب ہیں اور کھانا کھانے کے ان کے پاس کچھ نہیں ہے اس لیے وہ گھاس کھانے پر مجبور ہو گئے ہیں۔ یہ سن کر وکیل بولا۔ ”تم میرے ساتھ چلو۔“ ”لیکن جناب! میری بیوی اور تین بچے کہاں جائیں گے؟“ وکیل نے کچھ سوچا اور بولا۔ ”انہیں بھی ساتھ لے چلو۔“ وکیل نے دوسرے شخص کی جانب دیکھا جو مترجم نگاہوں سے اس کی جانب دیکھ رہا تھا۔ وکیل نے اسے بھی ساتھ چلنے کے لیے کہا۔ جس پر وہ گھبراتے ہوئے بولا۔ ”لیکن جناب میری بیوی اور پانچ بچے ہیں۔“ وکیل نے ہنس کر کہا۔ ”بہت خوب تم بھی اپنے بیوی بچے ساتھ لے لو۔“ دونوں خاندان پھنس پھنسا کر وکیل کی گاڑی میں بیٹھ گئے۔ جب گاڑی چل پڑی تو ایک شخص مشکور نگاہوں سے دیکھتا ہوا بولا۔ ”جناب! آپ بڑے رحم دل اور سخی آدمی ہیں‘ آپ کا بے حد شکریہ۔ آپ اب ہمیں کہاں لے کر جا رہے ہیں؟“ ”کوئی مسئلہ ہی نہیں‘ میرے گھر کے باغ کی گھاس ایک فٹ سے بھی زیادہ اونچی ہو گئی ہے۔“ وکیل نے اعتماد سے جواب دیا۔

مزید لطیفے

بہرے

behre

پڑتال

Partal

ماسٹر صاحب

Master sahab

بچہ دکاندار سے

Bacha dukandar se

خدمت یہ ہے کہ

khidmat yeh hai keh

ایک بڑے شہر

aik barray shehar

پہلا آپریشن

pehla operation

شخص وکیل سے

Shakhs wakeel se

استاد

Ustaad

گاہک ویٹر سے

gahak waiter se

کچھ بچا بھی؟

kuch bacha bhi

ماسٹر صاحب

Master Sahab

Your Thoughts and Comments