مقبوضہ کشمیر کی آبادی کے تناسب کو تبدیل کرنے سے مسئلہ کشمیر میں مزید پیچیدگی پیدا ہوگی کیونکہ بھارت دوطرفہ مذاکرات کے تمام ذرائع بند کرکے دنیا کے سامنے جھوٹ بول رہا ہے، صدرآزاد جموں و کشمیر مسعود خان

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 26 ستمبر2020ء) آزاد جموں و کشمیر کے صدر مسعود خان نے کہا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کی آبادی کے تناسب کو تبدیل کرنے سے مسئلہ کشمیر میں مزید پیچیدگی پیدا ہوگی کیونکہ بھارت دوطرفہ مذاکرات کے تمام ذرائع بند کرکے دنیا کے سامنے جھوٹ بول رہا ہے۔

(جاری ہے)

جمعہ کو نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بی جے پی کی حکومت کی جانب سے مقبوضہ وادی کی آبادی کی حیثیت تبدیل کرنے اور مقامی کشمیریوںکو معاشی حقوق سے محروم کرنے کے مکروہ منصوبہ سے مقبوضہ کشمیرکی صورتحال مزید خراب ہوگی، بھارت نے بہار ،یو پی آسام اور دیگر ریاستوںکے لوگوں کو مقبوضہ کشمیر میں آباد کرنے ،ان کے لئے روزگار کے 50 ہزار مواقع مہیا کرنے اور کشمیریوںکی زمینوں پر قبضہ کرنے کی سازش تیار کی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر پر عالمی برادری کی حمایت ہمارے لئے باعث فخر ہے اور ضروری ہے کہ ہم بحثیت قوم بھارتی عزائم کے خلاف متحد ہوں ۔انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے عوام بھارتی تسلط سے آزادی کے لئے 1947 سے جدو جہدکررہے ہیں جو پاکستان کے ساتھ رہنا چاہتے ہیںجنہوں نے آزادی کے لئے بڑی قربانیاں دی ہیں، بھارت نے کشمیری قیادت کو جیلوں میں قید کیا ہے اور ہزاروں افراد کو جبری لاپتہ کیا ہے ۔

Your Thoughts and Comments