لاہور ہائیکورٹ ، ماحولیاتی آلودگی کے خلاف درخواست پر ماحولیاتی کمیشن کے سربراہ ڈاکٹر پرویز حسن سے 27مئی کو رپورٹ طلب

منگل اپریل 19:43

لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 17 اپریل2018ء) لاہور ہائیکورٹ کی جسٹس عائشہ اے ملک نے ماحولیاتی آلودگی کے خلاف درخواست پر ماحولیاتی کمیشن کے سربراہ ڈاکٹر پرویز حسن سے 27مئی کو رپورٹ طلب کر لی۔

(جاری ہے)

درخواست گزار نے عدالت کو بتایا کہ حکومت اور انتظامیہ کی غفلت اور لاپرواہی کے باعث لاہور دنیا کے آلودہ ترین شہروں میں شامل ہو چکا ہے،انہوں نے کہا کہ قوانین پر عمل درآمد نہ ہونے اور غیر موثر قوانین ماحولیاتی آلودگی کا باعث بن رہے ہیں، ماحولیاتی الودگی کے باعث شہری بیماریوں میں مبتلا ہو رہے ہیں،انہوں نے کہا کہ عدالت عالیہ پہلے ہی پنجاب حکومت کو ماحولیاتی آلودگی کا زمہ دارٹھرا چکی ہے، عدالت نے ماحولیاتی کمیشن قائم کر کے محکمہ ماحولیات کو سفارشات پر عمل درآمد کا حکم دیا تھا جس پر عمل درآمد ہی شروع نہیں ہو سکا، انہوں نے استدعا کی کہ عدالت ماحولیاتی کمیشن کی سفارشات کی روشنی میں محکمہ ماحولیات کو اقدامات کرنے کا حکم دے،جس پر عدالت نے ماحولیاتی کمیشن کے سربراہ ڈاکٹر پرویز حسن سے 27مئی کو رپورٹ طلب کر لی۔