سگے باپ کی معصوم بیٹی سے 18 گھنٹے تک اجتماعی جنسی زیادتی

جمعرات اپریل 21:14

سگے باپ کی معصوم بیٹی سے 18 گھنٹے تک اجتماعی جنسی زیادتی
نئی دہلی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 اپریل2018ء) بھارت میں باپ نے اپنی ہی بیٹی کو دوستوں کے ساتھ مل کر مبینہ طور پر اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا اور پھر موقع سے فرار ہو نے میں کامیاب ہو گیا تاہم پولیس نے کارروائی عمل میں لاتے ہوئے ایک ملزم کو حراست میں لے لیاہے۔تفصیلات کے مطابق یہ واقع بھارتی شہر لکھنوسے 70 کلومیٹر دور واقع سیتا پور کے علاقے میں پیش آیا ، پولیس کا کہناہے کہ 50 سالہ شخص اور اس کی بیٹی کملا پور میں میلہ دیکھنے کیلئے 15 اپریل کی شب گئے اور تفریح کے بعد لڑکی کے باپ نے اپنے دوست مان سنگھ کو وہاں بلا لیا جس کے بعد انہوں نے لڑکی کو راضی کیا وہ بھی ان کے ساتھ چلے جس کے بعد وہ لڑکی کو اپنے ایک اور دوست میراج کے گھر لے گئے۔

دوست کے گھر پہنچنے کے بعد باپ نے اپنی بیٹی کو اپنے دوستوں کے حوالے کر دیا اور اس گھر میں لڑکی کو تینوں نے مسلسل 18 گھنٹے تک جنسی زیادتی کانشانہ بنایا تاہم لڑکی وہاں سے کسی طرح بھاگ نکلنے میں کامیاب ہوئی۔

(جاری ہے)

لڑکی جیسے تیسے اپنے گھر پہنچی اور اپنی ماں کو تمام واقعے سے آگاہ کیا جس کے بعد اسی دن مقدمہ درج کروا دیا گیاہے۔۔پولیس کا کہناہے کہ میراج کو گرفتار کر لیا گیاہے جبکہ لڑکی کا باپ اور مان سنگھ تاحال مفرور ہیں اور جس دن یہ واقع پیش آیا اس دن میراج کے اہل خانہ ان کے گھر نہیں تھے ،تفتیش کا عمل جاری ہے اور باقی دو ملزمان کو بھی جلد گرفتار کر لیا جائے گا۔

متعلقہ عنوان :