حوثی باغیوں کے قدم اکھڑنے سے ان کا خاتمہ نوشتہ دیوار ہے، یمنی وزیر اعظم

باغی ملیشیا کی صفوں میں شامل فریب خوردہ عناصر پر زور دیتا ہوں کہ وہ سیدھی راہ پر واپس آ جائیں اور یمنی فیڈریشن میں شامل سول حکومت کی مدد کریں، یمنی عوام حوثیوں کے اس نظریہ کو قطعی طور پر قبول نہیں کریں گے جس کے تحت وہ یمن میں حکمرانی کو آفاقی حق سمجھتے ہیں، احمد بن دغر کی گورنر صالح الرصاص سے ٹیلی فون پر گفتگو

ہفتہ اپریل 19:22

صنعاء (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 اپریل2018ء) یمنی وزیر اعظم احمد بن دغر نے کہا ہے کہ باغی حوثی ملیشیا کے قدم اکھڑ چکے ہیں اور ان کا حتمی خاتمہ نوشتہ دیوار ہے، باغی ملیشیا کی صفوں میں شامل فریب خوردہ عناصر پر زور دیتا ہوں کہ وہ سیدھی راہ پر واپس آ جائیں اور یمنی فیڈریشن میں شامل سول حکومت کی مدد کریں، یمنی عوام حوثیوں کے اس نظریہ کو قطعی طور پر قبول نہیں کریں گے جس کے تحت وہ یمن میں حکمرانی کو آفاقی حق سمجھتے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار یمنی وزیر اعظم نے البیضا کے گورنر صالح الرصاص سے ٹیلی فون پر گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ یمن کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کے مطابق ٹیلی فونک بات چیت میں گورنر البیضا نے انہیں عرب اتحاد کے تعاون سے سرکاری فوج کو ملنے والی کامیابیوں سے متعلق آگاہ کیا جو گورنری کو ایران نواز حوثی باغیوں سے آزاد کرانے کے سلسلے میں حاصل کی گئی ہیں۔

(جاری ہے)

وزیر اعظم نے البیضا گورنری کے مختلف محاذوں کو باغی ملیشیا کے چنگل سے آزاد کرانے کے لئے کی جانے والی کوششوں کو سراہا۔اتحادی فوج کی حمایت سے اس وقت یمنی فوج اور عوامی مزاحمت کار البیضا کو کئی اطراف سے مکمل طور پر آزاد کرانے کے لئے ایک لڑائی لڑ رہے ہیں جس میں انہیں باغی ملیشیا کا تسلط ختم کرانے میں مسلسل پیش قدمی حاصل ہو رہی ہے۔۔یمن کی آٹھ گورنریوں میں البیضا کو اسٹرٹیجک اہمیت حاصل ہے۔ اس میں فتح سے ذمار کی سمت ایک نیا محاذ کھولنے میں مدد ملے گی جو آگے چل کر دارلحکومت صنعا کا محاصرہ کر کے آزاد کرانے اور بغاوت کے خاتمے میں مدد کرے گا۔

متعلقہ عنوان :