ایس ای سی پی نے الہلال کو پہلی پاکستانی شریعہ ایڈوائزری کمپنی کے طور پر رجسٹر کرلیا

منگل اپریل 19:36

ایس ای سی پی نے الہلال کو پہلی پاکستانی شریعہ ایڈوائزری کمپنی کے طور ..
کراچی (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 اپریل2018ء) سیکورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان ((ایس ای سی پی)) نے الہلال شریعہ ایڈوائزرز (پرائیویٹ) لمیٹڈ کو پاکستان میں شریعہ مشاورتی قواعد 2017 کے تحت پہلی شرعی مشاورتی کمپنی کے طور پر رجسٹر کرلیا ہے۔ الہلال شریعہ ایڈوائزرز (پرائیویٹ) لمیٹڈ ملک میں پہلی شریعہ ایڈوائزری کمپنی ہے جو سیکورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان سے رجسٹرڈ ہے۔

یہ شرعی بنیادوں پر کام کرنے والی ایسٹ مینجمنٹ کمپنیوں، مضاربہ کمپنیوں سمیت اسلامی مالیاتی اداروں کو خدمات فراہم کرتی ہے۔ الہلال کا عزم ہے کہ روایتی سودی معیشت کو شرعی و مالیات کے ماہرین کی رہنمائی کے ساتھ اسلامی مالیاتی نظام پر منتقل کیا جائے۔ یہ ادارہ 2011 سے کام کررہا ہے لیکن ریگولیٹری ضروریات کے آغاز کے بعد یہ پاکستان میں پہلی شریعہ ایڈوائزری کمپنی کے طور پر رجسٹر ہوگئی ہے۔

(جاری ہے)

الہلال کے چیف ایگزیکٹو آفیسر فراز یونس بندوکڑا (سی ایف ای)نے کہا، ""ایس ای سی پی کی جانب سے پاکستان میں پہلی شریعہ ایڈوائزری کمپنی کا اعزاز ملنے پر ہمیں فخر ہے۔ اسلامی مالیات ایک بڑھتا ہوا رجحان ہے اور ہمیں ایسے ہر ادارے کے مستند سہولت کار بننے پر خوشی ہے جو شرعی اصولوں کے مطابق کام کرنا چاہتے ہیں ۔ ہمیں امید ہے کہ اب مزید کمپنیاں شرعی قواعد لاگو کریں گی ۔

ہم مشاورتی خدمات فراہم کرنا چاہتے ہیں تاکہ اس سے نہ صرف آپ کا کاروبار آگے بڑھے بلکہ منافع بخش ہونے کے ساتھ پائیدار بھی ہو۔" الہلال شریعہ ایڈوائزرز بینکنگ، انشورنس، انویسٹمنٹ منیجرز، کیپٹل مارکیٹس اور دیگر مالیاتی اداروں میں اسلامی مالیات کے شعبے میں شرعی مشاورت، شرعی آڈٹ اور تربیتی خدمات فراہم کرتا ہے۔ الہلال حلال فوڈ سرٹیفکیشن کے شعبہ میں بھی فعال ہے۔

شرعی ماہرین اور انڈسٹری پروفیشنلز پر مشتمل ٹیم کے ساتھ الہلال کمپنی ایسے اداروں کے لئے رہنمائی کا ذریعہ ہے جو اپنے کاروبار کو شریعت سے مطابقت رکھنا چاہتے ہیں ۔ پاکستان میں متعدد کمپنیاں اب اپنی کاروباری سرگرمیاں شرعی اصولوں سے ہم آہنگ کر رہی ہیں۔ شرعی مشاورتی خدمات فراہم کرنے والے اداروں کو موثر انداز سے چلانے کے لئے ایس ای سی پی نے حال ہی میں شرعی مشاورتی قواعد و ضوابط متعارف کرائے ہیں اور فی الوقت شرعی گورننس کے فریم ورک پر کام کیا جارہا ہے ۔

الہلال کے شریعہ سپروائزری کونسل کے ممبر مفتی ارشاد احمد اعجاز نے بتایا، "الہلال کے لئے یہ ایک بڑی کامیابی ہے۔ یہ ضروری ہے کہ اسلامی مالیات کے شعبے میں الہلال جیسے ادارے موجود ہوں تاکہ وہ رہنمائی میں مدد فراہم کریں اور پاکستان کے ساتھ عالمی سطح پر بھی شرعی اصولوں کی بنیاد پر کاروباری سہولیات کے بارے میں آگہی لائیں اور انہیں فروغ دیں۔ ہم چاہتے ہیں کہ شرعی اصولوں کی بنیاد پر کاروبار کے لئے کاروباری اداروں اور افراد کو سہولت فراہم کریں۔ اس سے طویل المیعاد بنیادوں پر پائیدار اسلامی مالیاتی مارکیٹ، کاروباری شعبہ اور پاکستان میں شریعت سے مکمل مطابقت رکھنے والی کیپٹل مارکیٹس کی ترقی کی راہ ہموار ہوگی۔"