سعودی عرب ایرانی خطرے سے نمٹنے کے لیے شراکت داری جاری رکھے گا، عادل الجبیر

سعودی حکومت جوہری معاہدے سے امریکی انخلا اور اقتصادی پابندیوں کی بحالی کا خیر مقدم کرتے ،سعودی وزیر خارجہ

بدھ مئی 22:34

ریاض(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 09 مئی2018ء) سعودی وزیر خارجہ عادل الجبیر نے کہا ہے کہ ایرانی خطرے سے نمٹنے کے لیے کام کرتے رہیں گے،جوہری معاہدے سے امریکی انخلا اور اقتصادی پابندیوں کی بحالی کا خیر مقدم کرتے ہیں۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق سعودی عرب کے وزیر خارجہ عادل الجبیر کا کہنا ہے کہ "ہم جوہری معاہدے سے امریکا کی علاحدگی کی تائید کرتے ہیں اور ایران پر اقتصادی پابندیاں بحال کرنے کے فیصلے کو سپورٹ کرتے ہیں۔

(جاری ہے)

ہم ایران کی معاندانہ پالیسیوں کے خطرے سے نمٹنے کے لیے اپنے شراکت داروں کے ساتھ مل کر کام کا سلسلہ جاری رکھیں گی"۔ٹوئیٹر پر اپنے دو علاحدہ بیانات میں سعودی وزیر کا مزید کہنا تھا کہ ایران نے پابندیاں ہٹائے جانے کے فیصلے سے فائدہ اٹھاتے ہوئے خطے کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کی کارروائیوں اور ہمارے خطّے میں دہشت گرد جماعتوں کی سپورٹ میں اضافہ کیا جن میں حزب اللہ اور حوثی ملیشیا شامل ہی"۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے منگل کے روز ایران کے ساتھ جوہری معاہدے سے دست بردار ہونے کا اعلان کیا۔ وہائٹ ہاؤس میں اپنے ٹی وی خطاب کے دوران انہوں نے معاہدے کو ایک "آفت" قرار دیتے ہوئے کہا کہ تہران پر پابندیاں بحال کی جا رہی ہیں۔