چیف جسٹس نے وکلاء کی جعلی ڈگریوں کے معاملے پر از خود نوٹس لے لیا ،ْ

تمام بار کونسلز کو نوٹسز جاری بالکل وکلاء کی ڈگریوں کی تصدیق کرانی چاہیے ،ْچیف جسٹس اور حامد خان میں مکالمہ

جمعرات مئی 14:06

چیف جسٹس نے وکلاء کی جعلی ڈگریوں کے معاملے پر از خود نوٹس لے لیا ،ْ
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 10 مئی2018ء) چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے وکلاء کی جعلی ڈگریوں کے معاملے پر از خود نوٹس لے لیا۔ گزشتہ روز سپریم کورٹ میں مختلف کیسز کی سماعت کے دوران چیف جسٹس نے وکیل رہنما حامد خان سے مکالمے کے دوران کہا کہ آپ یہ بھی دیکھیں کہ کتنے وکلا کی جعلی ڈگری ہے۔ چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ وکلا کی ڈگریوں کی تصدیق کرانی چاہیے یا نہیں جس پر حامد خان نے کہا کہ بالکل وکلاء کی ڈگریوں کی تصدیق کرانی چاہیے۔

(جاری ہے)

حامد خان نے کہا کہ بار ایسوسی ایشنز کو کہہ دیں وہ اس معاملے میں ڈیٹا فراہم کردیں جس پر چیف جسٹس نے حامد خان کو کہا کہ آپ نے اس معاملے میں حصہ ڈالنا ہے۔بعدازاں چیف جسٹس نے وکلا کی جعلی ڈگریوں کے معاملے پر ازخود نوٹس لیتے ہوئے تمام بار کونسلز کو نوٹسز جاری کردئیے۔۔چیف جسٹس نے کہا کہ تمام بار کونسلز ایک ماہ میں فوری طور پر عمل کر کے رپورٹ دیں ،ْ عدالت نے اس معاملے پر معاونت کے لیے ہائرایجوکیشن کمیشن کو بھی ہدایات جاری کردیں۔