شام پر بمباری میں اسرائیل کے 28 لڑاکا طیاروں نی70 میزائل داغے،روس

شام پر حملے بارے روس کو مطلع کر دیا گیا تھا،ترجمان اسرائیلی فوج لیفٹیننٹ کرنل جوناتھن کونری کس

جمعہ مئی 18:48

ماسکو(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) روس کی وزارت دفاع نے اسرائیل کے شام پر فضائی حملے کی تفصیل جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ شام پر بمباری میں اسرائیل کے 28 لڑاکا طیاروں نی70 میزائل داغے،میزائلوں سے ہونے والی تباہی کا تخمینہ لگایا جا رہا ہے، شام پر حملے بارے روس کو مطلع کر دیا گیا تھا۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق روس کی وزارت دفاع نے اسرائیل کے شام پر فضائی حملے کی تفصیل جاری کی ہے اور کہا ہے کہ اسرائیل کے 28 لڑاکا طیاروں نے شامی علاقوں پر فضائی بمباری میں حصہ لیا ہے اور انھوں نے شامی اہداف پر 70 میزائل داغے ہیں۔

انٹر فیکس خبررساں ایجنسی کے مطابق روسی وزارت دفاع نے جمعرات کو ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’ اسرائیل نے 28 ایف 15 اور ایف 16 لڑاکا طیاروں کو حملے میں استعمال کیا ہے۔

(جاری ہے)

انھوں نے فضا سے زمین میں مار کرنے والے 60 میزائل شام کے مختلف علاقوں پر داغے تھے۔ ان کے علا وہ 10 مزید زمین سے زمین پر مار کرنے والے میزائل بھی داغے گئے ہیں۔۔روس کا کہنا ہے کہ شام کے فضائی دفاعی نظام نے ان میں سے نصف سے زیادہ میزائلوں کو مار گرایا تھا اور باقی میزائلوں سے ہونے والے نقصانات کا اندازہ لگایا جارہا ہے۔

وزارت دفاع نے مزید بتایا ہے کہ اسرائیلی طیاروں نے دمشق کے نواح میں اور شام کے جنوبی علاقے میں ایران کے مسلح گروپوں کے ٹھکانوں اور شامی فوج کے فضائی دفاعی نظام کو نشانہ بنایا ہے۔۔اسرائیل کا کہناہے کہ بدھ کی رات اس کے زیر قبضہ گولان کی چوٹیوں پر شام سے قریباً 20 راکٹ فائر کیے گئے تھے اور اس نے ان راکٹوں کے ردعمل میں یہ فضائی حملہ کیا ہے۔

اس نے ایران کی القدس فورس پر یہ راکٹ فائر کرنے کا الزام عاید کیا ہے اور کہا ہے کہ اس کے میزائل شکن نظام نے ان میں سے چار کو ناکارہ بنا دیا تھا اور باقی اس کے علاقے میں نہیں گرے ہیں۔ادھر اسرائیلی فوج کے ایک ترجمان لیفٹیننٹ کرنل جوناتھن کونری کس نے کہا ہے کہ ’’روس کو شام میں مختلف اہداف پر حملوں کے بارے میں پیشگی مطلع کردیا گیاتھا‘‘۔تاہم انھوں نے اس کی مزید وضاحت نہیں کی ہے۔