ذخیرہ اندوزوں اور گراں فروشوں کی چاندی،

رمضان آتے ہی کھجور کی قیمتوں میں اضافہ کردیا

بدھ مئی 16:03

ذخیرہ اندوزوں اور گراں فروشوں کی چاندی،
کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 مئی2018ء) رمضان المبارک کی آمد کے ساتھ ہی ذخیرہ اندوزوں اور گراں فروشوں کی چاندی ہوگئی ہے، سکھر کی کھجور مارکیٹ میں کھجور کی قیمتیں آسمان سے باتیں کرنے لگی ہیں۔سکھراور خیرپور ملک میں کھجور کی پیداوار کے بڑے مراکز ہیں، یہاں سے کھجور بیرون ملک بھی بھیجی جاتی ہے، چند سال سے نئی فصل کارمضان المبارک کے بعد مارکیٹوں میں آنا کھجورکی قیمتوں میں اضافے کا بڑاسبب قراردیا جارہا ہے۔

کھجور کی فصل عید کے بعد مارکیٹوں میں آتی ہے،ابھی جو کھجور فروخت ہورہی ہے وہ کولڈ اسٹور سے آرہی ہے اس لئے مہنگی ہے۔دکانداروں کے مطابق کولڈ اسٹوریج سمیت دیگر اخراجات کو جواز بنا کر ذخیرہ اندوز فائدہ اٹھاتے ہیں،اصیل کھجور پیچھے سے مہنگی آ رہی ہے، اسی وجہ سے مہنگی ہو کر ساڑھے تین سو سے چار سوروپے کلو فروخت ہو رہی ہے۔

(جاری ہے)

ماہ صیام قریب آتے ہی ذخیرہ اندوز کھجور کی قیمتوں میں من مانا اضافہ کر رہے ہیں،جس سے خریدارسخت پریشان ہیں۔

یوں تو سندھ میں کئی اقسام کی کھجورپیداہوتی ہے لیکن اصیل کھجور مہنگی ہونے کے باوجود خریداروں کی من پسند ہے۔۔رمضان المبارک میں کھجور کی قیمتوں میں 50سے 100روپے فی کلو اضافہ کردیا جاتا ہے۔شہریوں نے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت مہنگائی کو کنٹرول کرنے کے لیے اقدامات کرے۔