رمضان ٹریفک پلان، کراچی پانچ سیکٹرز میں تقسیم

بدھ مئی 20:28

کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 16 مئی2018ء) ڈی آئی جی ٹریفک عمران یعقوب منہاس نے کہاہے کہ کراچی کا ٹریفک برقرار رکھنا ہے تو تجاوزات ہٹانی ہوں گی، سڑکوں کی تعمیر اور مرمت کرنا ہوگی، سیوریج سسٹم ٹھیک کرنا ہوگا اور پارکنگ کے مناسب انتظامات کرنے ہوں گے۔میڈیا سے بات چیت میںانہوں نے کہا کہ شہر کو پانچ سیکٹرز میں تقسیم کر کے اضافی نفری بھی تعینات کر رہے ہیں لیکن جب تک ان مسائل کا حل نہیں نکالا جاتا ٹریفک کے مسائل کو حل کرنا ممکن نہیں ہے۔

ڈی آئی جی ٹریفک کے مطابق پہلا سیکٹر ٹاور سے قائد آباد، دوسرا عیدگاہ چوک سے سہراب گوٹھ، تیسرا گرومندر سے پاور ہائوس چورنگی، چوتھا سیمنز چورنگی سے مواچھ گوٹھ اور پانچواں سیکٹر گارڈن چوک سے پاک کالونی تک ہے۔ڈی آئی جی ٹریفک عمران یعقوب منہاس نے بتایاکہ تمام بڑے انٹرسیکشنز کو کھلا رکھا جائے گا، بالخصوص دفتری اور تعلیمی اداروں کے اوقات میں۔

(جاری ہے)

انہوں نے بتایا کہ ٹریفک کی روانی بحال رکھنے اور پارکنگ کے مناسب انتظام کیلئے ٹریفک وارڈنز اور اسکاوٹس تنظیموں سے مدد لی جائے گی۔ڈی آئی جی ٹریفک نے کہاکہ دوسرے عشرے میں شاپنگ سینٹرز پر خصوصی انتظامات کیے جائیں گے، ضلع ایس ایس پیز کو ہدایت کی گئی ہے کہ شاپنگ سینٹرز اور مارکیٹ انتظامیہ سے مل کر رضا کاروں کا بندوبست بھی کیا جائے۔

انہوں نے ٹریفک کے ضلع ایس ایس پیز کو پولیس اور انتظامیہ کی مدد سے رکاوٹیں ہٹانے کا حکم بھی دیا ہے۔عمران یعقوب منہاس نے کہاکہ خصوصی کنٹرول رومز کے علاوہ شہریوں کو 1915، ایف ایم 886 اور سوشل میڈیا سے آگاہی فراہم کی جاتی رہے گی۔ڈی آئی جی ٹریفک نے متعلقہ حکام سے سفارش کی ہے کہ ٹریفک کی روانی کے لیے تجاوزات کا خاتمہ، ٹوٹی سڑکوں کی تعمیر، سیوریج سسٹم کو ٹھیک کرنے اور مناسب پارکنگ کے مقامات کا تعین کیا جائے۔

واضح رہے کہ کراچی،، ملک کا سب سے بڑا، سب سے زیادہ آبادی پر مشتمل شہر ہے جہاں ٹوٹی پھوٹی سڑکیں، غلط انجینئرنگ، 300سے زائد چوکنگ پوائنٹس اورشہریوں کی نفسیات اور اعصاب کو تباو وبرباد کرنے والا مسئلہ ٹریفک جام روز کا مسئلہ ہے تاہم رمضان میں کیا ہوگا ۔یہ ہے شدید گرمی میں وہ گرما گرم سوال جس کیلئے ٹریفک پولیس حکام کی جانب سے ٹریفک پلان بناتے ہوئے شہر کی مرکزی شاہراہوں کو پانچ سیکٹرزمیں تقسیم کردیا گیا ہے۔