امریکا نے ایران پر تاریخ کی سخت ترین پابندیاں عائد کرنے کا عندیہ دے دیا

ایران کے مزید میزائل تجربات قبول نہیں ،تہران پر مالی دباؤ بڑھائیں گے، امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو

منگل مئی 16:58

واشنگٹن (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 مئی2018ء) امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو کا کہنا ہے کہ ایران پر تاریخ کی سخت ترین پابندیاں عائد کی جا سکتی ہیں۔۔امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ ایران کے معاملے پر نئے معاہدے کے لیے تیار ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ ہم ماضی کی غلطیوں کو نہیں دہرائیں گے اور ایران کو دوبارہ جوہری تجربوں کی جانب نہیں جانے دیں گے۔

امریکی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ ایران کو یورینیئم کی افزودگی روکنی ہو گی اور تمام جوہری سائٹس تک مکمل رسائی دینی ہو گی۔انہوں نے کہا کہ ایران کے مزید میزائل تجربات قبول نہیں اور اس کے لیے ہم تہران پر مالی دباؤ بڑھائیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ ایران پر پابندیاں تاریخ کی سخت ترین پابندیاں ہو سکتی ہیں۔

(جاری ہے)

مائیک پومپیو نے کہا کہ ایران نے جوہری معاہدے کے دوران مشرق وسطیٰ میں اثر و رسوخ بڑھایا اور ایران خطے میں پراکسی وار کا سبب بن رہا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ایران دہشت گردی کی حمایت کرنے میں پہلے نمبر پر ہے لیکن ہم خطے میں ایرانی سرگرمیوں کو ختم کریں گے۔انہوں نے کہا کہ ایران کو شام سے اپنی تمام فورسز واپس بلانی ہوں گی اور دھمکی آمیز رویہ ترک کرنا ہو گا۔۔امریکی وزیر خارجہ نے کہا کہ ممکنہ ایرانی جارحیت سے متعلق اتحادیوں سے رابطے میں ہیں۔انہوں نے کہا کہ ایرانی رویے میں تبدیلی پر امریکی پابندیاں ختم ہو سکتی ہیں تاہم امریکی پابندیوں میں نرمی ایرانی پالیسیوں کے تبدیل ہونے پر ہی ہو گی۔۔مائیک پومپیو نے کہا کہ ایران سے تجارت کرنے والی یورپی کمپنیوں کے خلاف بھی کارروائی کریں گے لیکن ایرانی پالیسی تبدیل ہونے پر امریکا سفارتی، معاشی تعلقات بحال کر سکتا ہے۔