قومی اسمبلی سے فاٹا انضمام بل کی منظوری سے قبائلی عوام کو طویل قید سے رہائی مل گئیں، قبائلی عمائدین

جمعہ مئی 19:53

اورکزئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 مئی2018ء) اورکزئی ایجنسی کے قبائلی عمائدین نے کہا ہے کہ قومی اسمبلی سے فاٹا انضمام بل کی منظوری سے قبائلی عوام کو طویل قید سے رہائی مل گئیں اور فاٹا کے خیبر پختونخواہ میں انضمام سے قبائلیوں کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی خاطر قربانیوں کے بائوجود فاٹا عوام کی ہر طرح کی حق تلفی کی گئی تا ہم قبائلی علاقاجات کی خیبر پختونخواہ میں انضمام سے قبائلی عوام کو بھی ملک کے دیگر شہریوں کی طرح حقوق حاصل ہوں گے۔

قبائلی عمائدین نے حکومت کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ وفاقی حکومت نے فاٹا انضمام کا فیصلہ کر کے قبائلی عوام کے دل جیت لئے اور حکومت کے اس اقدام کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخواہ میں انضمام کے ساتھ ساتھ حکومت کو قبائلی علاقاجات میں 5سال کے اندر تعلیم،، صحت، مواصلات، آبپاشی، آبنوشی و دیگر شعبہ جات میں ترقیاتی منصوبوں پر توجہ دینی چاہئیے تا کہ قبائلی عوام کو آزادی کے ساتھ ساتھ ملک کی دیگر شہریوں کی طرح سہلویات بھی میسر ہوں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ قبائل وہ لوگ ہے جنہوں نے ملک کی خاطر جان و مال کی قربانیاں دیں ہے جبکہ آئیندہ بھی ملک کی خاطر قربانیاں دینے کی روایت برقرار رکھی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ پولیٹیکل ایڈمنسٹریشن نے فاٹا کے عوام کو یرغمال بنائے رکھا اور من پسند فیصلے کر کے ہمیشہ حالات خرا ب کر کے قبائلی عوام کو بدنام کرنے کی سازشیں کی گئی تا ہم فاٹا انضمام سے اب ان کی من مانیاں بھی ختم ہو جائے گی جبکہ فاٹا کے عوام سپریم کورٹ اور ہائی کورٹ تک اپنے حق کے لیے لڑ سکیں گے۔