پانی کا ضیاع روکنے کے لئے ڈرپ ایری گیشن اور سپرنکلرز ٹیکنالوجی کے استعمال کے فروغ کے لئے اقدامات کئے جارہے ہیں، ڈائریکٹر جنرل آن فارم واٹر مینجمنٹ پنجاب

پیر مئی 10:20

اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 28 مئی2018ء) گزشتہ 70 سال کے دوران ملک میں پانی کی فی کس سالانہ دستیابی 5ہزار مکعب میٹر سے کم ہو کر 900 مکعب میٹر رہ گئی ہے جس سے زراعت سمیت دیگر مقاصد کے لئے پانی دستیابی میں کمی کے خدشات کا سامنا ہے۔ آن فارم واٹر مینجمنٹ پنجاب کے ڈائریکٹر جنرل اکرم ملک نے کہا ہے کہ صوبہ میں زرعی مقاصد کے لئے استعمال ہونے والے پانی کے ضیاع کے تدارک کے لئے ڈرپ ایری گیشن اور سپرنکلرز ٹیکنالوجی کے استعمال کے فروغ کے لئے اقدامات کئے جارہے ہیں۔

(جاری ہے)

انہوں نے کہا کہ صوبہ میں اب تک 37 ہزار ایکڑ رقبہ کو سیراب کرنے کے لئے آبپاشی کے جدید سسٹم لگائے گئے ہیں انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ دو سال کے دوران صوبہ پنجاب میں 20 ہزار ایکڑ رقبہ پر ڈرپ ایری گیشن سسٹم لگائے گئے ہیں جبکہ گزشتہ ایک سال میں صوبہ کے مختلف علاقوں میں سپر نکلرز ٹیکنالی سے زمین سیراب کرنے کے لئے 400 ایکڑ رقبہ پر سسٹم لگائے جاچکے ہیں انہوں نے کہا کہ پانی کی قلت کے پیش نظر پانی کی ضیاع کو روکنے اور اس سے زیادہ سے زیادہ استفادہ کی ضرورت ہے جس کے لئے صوبائی حکومت ہر طرح کی ممکنہ معاونت فراہم کررہی ہے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

متعلقہ عنوان :