حبیب بینک لمیٹڈ نے انٹربینک ایسوسی ایشن کے اجلاس کے دوران ممبرشپ بینک کا اسٹیٹس حاصل کرلیا

جمعرات جون 20:14

حبیب بینک لمیٹڈ نے انٹربینک ایسوسی ایشن کے اجلاس کے دوران ممبرشپ بینک ..
کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 07 جون2018ء) حبیب بینک لمیٹڈ نے شنگھائی تعاون تنظیم کے انٹربینک ایسوسی ایشن (ایس سی او آئی بی ای) کے 14 ویں کونسل اجلاس کے دوران باقار انداز سے ممبرشپ بینک کا اسٹیٹس حاصل کرلیا ہے۔ جمعرات کو یہاں جاری کردہ اعلامیہ کے دوران یہ اجلاس چین کے دارالحکومت بیجنگ میں 4 جون سے 7 جون تک جاری تھا۔ شنگھائی تعاون تنظیم (ایس سی او) یوریشین خطے کی سیاسی، معاشی اور سیکورٹی تنظیم ہے اسکے قیام کا اعلان 15 جون 2001 کو شنگھائی میں چین،، قازقستان، کرغزستان، روس،، تاجکستان اور ازبکستان کے رہنماؤں کی جانب سے کیا گیا۔

یہ جغرافیائی اور آبادی کے اعتبار سے دنیا میں سب سے بڑی علاقائی تنظیم ہے اور دنیا کے سب سے طاقتور اداروں میں سے ایک ہے۔ پاکستان شنگھائی تعاون تنظیم کا باقاعدہ رکن 9 جون 2017 کو منعقد ہونے والے 17ویں ایس سی او کے سربراہان مملکت کے اجلاس میں بنا۔

(جاری ہے)

ایچ بی ایل 8 اگست 2014 کو ایس سی او آئی بی اے کا پارٹنر بینک بنا اور ایس سی او آئی بی اے کونسل کے موجودہ اجلاس میں دیگر ممبر بینکوں کی منظوری کے ساتھ ایچ بی ایل نے ممبر بینک کے طور پر مزید اہمیت حاصل کرلی ہے۔

یہ ایچ بی ایل کے لئے اہم کامیابی اور انتہائی اعزاز کی بات ہے کہ وہ ایس سی او بینکنگ فورم پر پاکستان کی نمائندگی کرے گا۔ یہ اس فورم میں پہلا اور واحد کمرشل بینک ہے۔ ممبر بینک کے طور پر ایچ بی ایل کے اسٹیٹس میں بہتری سے یہ علاقائی تجارت، سرمایہ کاری اور مالیات کو فروغ دینے کے لئے اہم کردار ادا کرنے کی پوزیشن میں آگیا ہے۔ دیگر بہت سے اقدامات میں پہل کرنے کے ساتھ ایچ بی ایل پاکستان کا پہلا بینک ہے جس نے چین میں اپنی برانچ کے قیام کا لائسنس حاصل کیا۔

یہ پہلا جنوبی ایشیائی بینک ہے جسے چینی صوبہ سنکیانگ کے سب سے بڑے شہر ارمچی میں اپنے بینکنگ آپریشنز کے قیام کی اجازت ملی تھی اور یہ صوبہ روایتی شاہراہ ریشم کے ساتھ پاکستان کی سرحد سے منسلک ہے۔ ایچ بی ایل کی ارمچی برانچ اب مکمل طور پر فعال ہے اور بیجنگ میں اپنی دوسری برانچ کھولنے کے لئے ایچ بی ایل کے چینی بینکنگ ریگولیٹر کے ساتھ مشاورت اہم مراحلے میں جاری ہے۔

سال 2018میں ایچ بی ایل گو ادر فری زون میں اپنی برانچ کھولنے والا پہلا بینک تھا۔ اس کے ساتھ ساتھ ایچ بی ایل پاکستان کا پہلا بینک ہے جس نے پاکستان میں پنے صارفین کو چینی کرنسی میں اکائونٹ کھولنے کی سہولت فراہم کی۔ ترقی میں قائدانہ کردار کے ساتھ ایچ بی ایل سی پیک کے آغاز سے ہی انتہائی اہمیت کا حامل رہا ہے۔ ایچ بی ایل کارپوریٹ اینڈ انویسٹمنٹ بینک اس اقدام کو چینی مالیاتی اداروں کے تعاون سے آگے بڑھانے کے لئے مسلسل کام کر رہا ہے۔ ایچ بی ایل کو بڑے چینی بینکوں سے کامیابی کے ساتھ اشتراک پر فخر ہے جو بڑے پیمانے پر قابل ذکر انداز میں ٹرانزایکشنز کی ذمہ داریاں پوری کرکے سی پیک کے خواب کو حقیقت میں ڈھال رہے ہیں۔