چین قیامِ امن کے لیے اقوامِ متحدہ کا ساتھ د ے گا, وانگ شیا ہونگ

جمعہ جون 13:12

نیویارک (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 22 جون2018ء) چین کے ایگزیکٹو وائس وزیر پبلک سیکیورٹی نے کہا ہے کہ چین قیامِ امن کے لیے اقوامِ متحدہ کا ساتھ د ے گا، اقوام متحدہ کی ورکشاپس کی میزبانی کرے گا، اقوام متحدہ کے ساتھ شراکت داری کرتے ہوئے موبائل تربیتی ٹیمیں تشکیل دے گا ۔ چائنہ ریڈیو انٹرنیشنل کے مطابق اقوامِ متحدہ کی دوسری چیفس آف پولیس سمٹ میں شریک چین کے ایگزیکٹو وائس وزیر پبلک سیکیورٹی نے کہا کہ چین قیامِ امن کے لیے اقوام متحدہ کی خدمات میں اس کا مزید ساتھ دے گا۔

وانگ شیا ہونگ نے کہا کہ چین اقوام متحدہ کی قیام امن کی استعداد کو بڑھانے کے لیے اپنا بھر پور کردار ادا کرنے کو تیار ہے ۔ انہوں نے سمٹ کو بتایا کہ چین اقوام متحدہ کی ورکشاپس کی میزبانی کرے گا، اقوام متحدہ کے ساتھ شراکت داری کرتے ہوئے موبائل تربیتی ٹیمیں تشکیل دے گا اور افریقہ کے لیے تربیتی پروگرامز کو ترجیحات میں رکھے گا تا کہ قیام امن کے لیے ایک ہزار پولیس افسران کی تربیت کا ہدف حاصل کیا جاسکے۔

(جاری ہے)

انہوں نے مزید کہا کہ چین اقوام متحدہ کے فریم ورک میں رہتے ہوئے افریقہ میں قانون کے نفاذ کی صلاحیتوں کو بہتربنانے کے لیے افریقی ممالک کی مدد پر تیار ہے ۔ وانگ شیا ہونگ نے افرادی قوت کی صورت میں مزید مدد دینے کے عزم کا بھی اظہار کیا اور کہا کہ چین پیشہ ورانہ صلاحیت کے حامل اہلکار مہیا کرے گا اور قیام امن کے لیے خواتین آفیسرز کو تربیت بھی فراہم کرے گا وانگ شیا ہونگ نے یہ بھی بتایا کہ چین نے تین سو تیس افسران پر مشتمل دو فوری امدادی پولیس یونٹس کی تشکیل اور اہلکاروں کی تربیت کو مکمل کیا جبکہ قیام امن کے لیے دیگر ممالک کے چار سو سے زائد پولیس آفیسرز کو بھی تربیت دی ہے ۔