بھارتی نوجوانوں میں نئی لت،

غیرملکی خواتین کا ریپ کرنا ہائی سوسائٹی کا سمبل بنتا جا رہا ہے

ہفتہ جون 14:44

بھارتی نوجوانوں میں نئی لت،
نئی دہلی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 جون2018ء) ترک نشریاتی ادارے کی رپورٹ کے مطابق نئی دھلی سے شروع ہونے والی ریپ کرنے کی لہر اب بھارت کے مختلف علاقوں تک پھیلتی چلی جا رہی ہے اور خاص طور پر بھارتی نوجوان غیر ملکی خواتین کا ریپ کرنا اپنے لیے باعث فخر سمجھتے ہیں۔۔دنیا میں اس وقت سب زیادہ ریپ بھارت میں ہو رہے ہیں اور بھارتی دارالحکومت نیو دھلی کو ریپ دارالحکومت کے نام سے بھی یاد کیا جانے لگا ہے۔

(جاری ہے)

نئی دھلی سے شروع ہونے والی ریپ کرنے کی لہر اب بھارت کے مختلف علاقوں تک پھیلتی چلی جا رہی ہے اور خاص طور پر بھارتی نوجوان غیر ملکی خواتین کا ریپ کرنا اپنے لیے باعث فخر سمجھتے ہیں۔۔بھارت کی ریاست جھار کھنڈ میں بھی غیر ملکی خواتین ہی کو ریپ کا نشانہ بنایا گیا ہے۔ مقامی پولیس افسر راجیش پرشاد نے اے ایف پی کو بتایا کہ یہ خواتین ایک غیر سرکاری تنظیم آشا کرن کے لیے کام کرتی ہیں۔ پولیس کے پاس درج ان خواتین کی شکایت میں کہا ہے کہ وہ انسانی اسمگلنگ کے خلاف ایک ڈرامے میں پرفارم کر رہی تھیں جب انہیں اغوا کیا گیا۔

متعلقہ عنوان :