داعش کا قبضہ ختم ہونے کے بعد موصل میں ریڈیو مقبول

منگل جون 18:48

موصل ۔ 24 جون (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 جون2018ء) عراق کے شہر موصل پر جہادی تنظیم ’داعش‘ کا قبضہ ختم ہونے کے بعد سماجی و معاشرتی حالات یکسر بدل گئے ہیں۔ کئی ریڈیو چینلز کھل گئے ہیں اور عام لوگ ان سے لطف اندوز ہو رہے ہیں۔۔عراق کے تاریخی و تمدنی شہر موصل پر دہشت گرد تنظیم ’داعش‘ کے قبضے کے دوران زیادہ تر مقامی ریڈیو اسٹیشن بند کر دیے گئے تھے اور جنہیں کھلا رکھا گیا، وہ صرف جہادی مواد بشمول پراپیگنڈا نشر کرتے تھے۔

(جاری ہے)

داعش کے قبضے کے دوران ان میں کسی بھی ریڈیو سے کوئی دوسرا مواد نشر ہوتا تو ایسا کرنے والوں کو سخت سزا دی جاتی تھی۔اس شہر کا قبضہ عراقی فوج نے چھڑا لیا ہے اور داعش کی شکست کے بعد شہر کی معاشرتی و ثقافتی صورت حال تبدیل ہو کر رہ گئی ہے۔ اب موصل کی فضاؤں میں مقامی ایف ایم ریڈیوز نے ایک ہلچل کی فضا قائم کر رکھی ہے۔ان ریڈیو چینلز پر نوجوان عراقی اپنی ذہانت کے ساتھ اپنے سامعین کو اپنی جانب راغب کیے ہوئے ہیں۔ کئی ریڈیو اسٹیشن چوبیس گھنٹے تفریحی پروگرام نشر کرتے ہیں جو ذہین نوجوانوں کی صلاحیتوں سے جگمگا رہے ہیں۔ ان نوجوان ایف ایم ڈی جیز میں کئی ٹین ایجر بھی ہیں۔ ایسی ہی ایک سولہ سالہ لڑکی نور طائی ہے اور وہ انتہائی مشاقی کے ساتھ اپنا پروگرام پیش کرتی ہے۔

متعلقہ عنوان :