ہائیکورٹ نے الیکشن کمیشن کی منظوری کے بغیر تبادلے غیر قانونی قرار دیدیئے

سرکاری افسران اورملازمین کے تبادلوں کیلئے الیکشن کمیشن کی منظوری ضروری قرار دیدی

بدھ جون 21:21

ہائیکورٹ نے الیکشن کمیشن کی منظوری کے بغیر تبادلے غیر قانونی قرار دیدیئے
لاہور (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 27 جون2018ء) لاہور ہائیکورٹ نے الیکشن کمیشن کی منظوری کے بغیر تبادلے غیر قانونی قرار دیدیئے۔ لاہور ہائیکورٹ کی جسٹس عائشہ اے ملک نے ذوالفقار علی کی درخواست پر سماعت کی۔درخواست گزار کی جانب سے بیرسٹر احمد قیوم نے موقف اختیار کیا کہ انتخابات سے قبل الیکشن کمیشن کی اجازت کے بغیر کسی بھی سرکاری محکمہ میں تقرر تبادلہ نہیں ہوسکتا۔

اس کے باوجود اکثر محکموں میں تبادلے کیے جارہے ہیں۔

(جاری ہے)

علاوہ ازیں انہوں نے نشاندہی کی کہ ڈی سی نارووال آفس کے کلرک ذوالفقار علی کا بھی خلاف قانون تبادلہ کر دیا گیا ہے۔لہٰذا استدعا ہے کہ الیکشن کمیشن کی منظوری کے بغیر ہونے والے تبادلے کے نوٹیفکیشن کو منسوخ کیا جائے۔۔عدالت میں سرکاری وکیل نے موقف اختیار کیا کہ تمام نوعیت کے تبادلوں کیلئے الیکشن کمیشن کی منظوری ضروری نہیں ہے۔۔عدالت نے کلرک ذوالفقار علی کے تبادلے کا نوٹیفکیشن معطل کرتے ہوئے قرار دیا کہ منظوری کے بغیر تقرر تبادلے غیر قانونی ہیں۔