سائبر کرائم سے نمٹنے کیلئے متعدد تفتیشی ادارے قائم کرنے میں کوئی قانونی رکاوٹ نہیں ہے ،بیرسٹر فروغ نسیم

پی ٹی اے اور سائبر کرائم کی صلاحیت بہتر بنانے کیلئے اقدامات کرنا ہونگے،شہریار آفریدی

بدھ نومبر 23:18

سائبر کرائم سے نمٹنے کیلئے متعدد تفتیشی ادارے قائم کرنے میں کوئی قانونی ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 14 نومبر2018ء) وفاقی وزیر برائے قانون و انصاف بیرسٹر فروغ نسیم نے کہا ہے کہ سائبر کرائم سے نمٹنے کیلئے متعدد تفتیشی ادارے قائم کرنے میں کوئی قانونی رکاوٹ نہیں ہے جبکہ وزیر مملکت شہریار آفریدی نے کہا ہے کہ پی ٹی اے اور سائبر کرائم کی صلاحیت بہتر بنانے کیلئے اقدامات کرنا ہونگے۔وفاقی وزیر بیرسٹر فروغ نسیم نے یہ بات بدھ کو الیکٹرانک جرائم کی روک تھام کیلئے بین الوزارتی کمیٹی کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی ۔

(جاری ہے)

اجلاس میں وفاقی وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی خالد مقبول صدیقی اور وزیر مملکت برائے داخلہ شہریار آفریدی نے بھی شرکت کی ۔ وفاقی وزیر قانون بیرسٹر فروغ نسیم نے کہا کہ تمام سکیورٹی ایجنسیز کی تجاویز لینے کیلئے ایک سب کمیٹی بنانے کی ضرورت ہے ۔انہوں نے کہا کہ عام اداروں کی صلاحیتوں کو سکیورٹی ایجنسیز کے طرز پر بڑھانے کیلئے اقدامات کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ سائبر کرائم سے نمٹنے کے لئے متعدد تفتیشی ادارے قائم کرنے میں کوئی قانونی رکاوٹ نہیں ہے۔اس موقع پر وزیر مملکت شہر یار آفرید ی نے کہا کہ پی ٹی اے اور سائبر کرائم کی صلاحیت بہتر کرنے کے لئے اقدامات کرنا ہونگے۔