سعودی عرب، ماہِ رمضان کے بعد معروف عالمِ اسلام سلمان العود سمیت 3 دینی شخصیات کو سزائے موت دینے کی تیاریاں

جمعرات مئی 21:44

سعودی عرب، ماہِ رمضان کے بعد معروف عالمِ اسلام سلمان العود سمیت 3 دینی ..
ریاض(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - آن لائن۔ 23 مئی2019ء) سعودی عرب ماہِ رمضان کے بعد معروف عالمِ اسلام سلمان العود سمیت 3 دینی شخصیات کو سزائے موت دینے کی تیاریاں کر رہا ہے۔برطانوی میڈیا نے اپنی رپورٹ میں سعودی عرب کے دو حکومتی ذرائع اور علمائ میں سے ایک کے عزیز کا حوالہ دیتے ہوے کہا کہ سعودی عرب میں سال 2017 میں گرفتار کئے جانے والے عالم سلمان العود، خطیب عود الکریم اور دینی ٹیلی ویڑن پروگرام کے کمپئیر علی العمر کو ماہِ رمضان کے بعد سزائے موت دے دی جائے گی۔

دو مختلف حکومتی ذرائع نے دعوی کیا ہے کہ ملزمان پر مقدمہ ریاض میں ایک خصوصی تعزیراتی عدالت میں چلایا جا رہا ہے اور غیر معینہ مدت کیلئے ملتوی کی گئی پیشی کی سماعت میں فیصلہ سنائے جانے کے بعد جلد ہی سزائے موت دے دی جائے گی۔

(جاری ہے)

واضح رہے کہ سلمان العود دنیا بھر میں معتدل اسلام کے طرز فکر کے ساتھ پہچانے جاتے ہیں اور ٹویٹر پر ان کے تقریباً 13.4 ملین فالوورز ہیں۔

عود کو 2017 میں گرفتار کیا گیا اور تقریباً ایک سال کے بعد دہشت گرد تنظیم کی قیادت، ریاض کے قطر کے خلاف لگائے گئے محاصرے کی مخالفت، اخوان المسلمین تنظیم کے ساتھ تعاون، حکومت کی کامیابیوں کے خلاف کنایہ کرنے، قطر کے شاہی خاندان کے ساتھ تعلق رکھنے، قومی سلامتی کیلئے خطرہ تشکیل دینے اور تشدد میں ملوث ہونے جیسے 37 مختلف الزامات کے ساتھ عدالت کے سامنے پیش کیا گیا تھا۔