ایک ہمسایہ ملک پاکستان میں انتشار پھیلانا چاہتاہے، صوفیاء کی تعلیمات پرعمل کرکے امن اور بھائی چارے کو فروغ دیا جائے

وزیرخارجہ مخدوم شاہ محمودقریشی کا حضرت بہائو الدین زکریا کے عرس کی افتتاحی تقریب سے خطاب

بدھ ستمبر 17:56

ایک ہمسایہ ملک پاکستان میں انتشار پھیلانا چاہتاہے، صوفیاء کی تعلیمات ..
ملتان ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 23 ستمبر2020ء) وزیرخارجہ اور دربارعالیہ حضرت بہائو الدین زکریاملتانی کے سجادہ نشین مخدوم شاہ محمودقریشی نے کہا ہے کہ ملک میں امن ،رواداری اور محبتوں کو فروغ دینے کے لیے صوفیاء کرام اور بزرگان دین کی تعلیمات پر عمل پیراہونا ضروری ہے۔ ان خیالات کااظہارانہوں نے بدھ کے روز برصغیر کے عظیم روحانی پیشوا حضرت بہائو الدین زکریاملتانی سہروردی کے تین روزہ 781ویں سالانہ عرس مبارک کے موقع پر قومی زکریاکانفرنس کی پہلی نشست سے خطاب کے دوران کیا۔

وزیر خارجہ نے مزید کہا کہ پاکستان کے دشمن سازشوں میں مصروف ہیں۔ ایک ہمسایہ ملک پاکستان میں انتشار پھیلانا چاہتاہے۔ہمیں دشمن کی سازشوں کوسمجھنا چاہیے اور متحد ہوکر ان سازشوں کامقابلہ کرناہوگا۔

(جاری ہے)

وزیرخارجہ نے کہاکہ پاکستان اس وقت ترقی کی راہ پر گامزن ہے اور بہت جلد تبدیلی کے ثمرات عوام تک پہنچنا شروع ہوجائیںگے۔انہوںنے کہا کہ لوگ دوردراز علاقوں سے اپنا آرام چھوڑ کر روحانی سکون حاصل کرنے کے لیے یہاں آئے ہیں۔

انہیں محبت کاجو بوسہ یہاں سے ملتا ہے وہ کہیں اور سے نہیں ملتا۔ وزیرخارجہ نے کہا کہ ہمیں کسی کے عقیدے کو نہیں چھیڑنا چاہیے۔ عقائد کا احترام صوفیاء کرام کی تعلیمات کا مرکزی نقطہ ہے۔ انہوں نے زائرین پر زور دیا کہ کہ وہ اتحاد بین المسلمین کے لیے اپنا کرداراداکریں۔قبل ازیں انہوں نے حضرت بہائو الد ین زکریا کے مزار کو غسل دیکر عرس کی تقریبات کاافتتاح کیا۔ اس موقع پر مخدوم زادہ زین قریشی، سجادہ نشین دربارچادروالی سرکاری سید علی حسین شاہ، معاون خصوصی وزیراعلی پنجاب حاجی جاوید اختر انصاری، ڈپٹی کمشنرملتان عامرخٹک اور معروف صنعتکار جلال الدین رومی بھی موجودتھے۔اس موقع پر سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے۔

متعلقہ عنوان :