Subha Bakhair

صبح بخیر

ایک شیدائی رات کو بار بار اپنی محبوبہ سے ”شب بخیر‘ کہہ کر اٹھتا تھا اور پھر جم جاتا تھا۔ رخصت ہونے کا جی چاہتاہی نہ تھا آخری بار جب اس نے شب بخیر کہا تو اوپر سے آواز آئی۔ صاحب زادے اب تو صبح بخیر کہو۔

Your Thoughts and Comments