نوازشریف کی خواہش پر جاتی عمرا کا تحصیلدار چیف جسٹس سپریم کورٹ نہیں لگایا جا سکتا‘شجاعت حسین

عدلیہ کو کمزور اور تنقید کا نشانہ بنانے والے احمقوں کی جنت میں رہتے ہیں، چیف جسٹس بڑے پن کا مظاہرہ کر رہے ہیں

بدھ فروری 15:09

نوازشریف کی خواہش پر جاتی عمرا کا تحصیلدار چیف جسٹس سپریم کورٹ نہیں ..
لاہور/اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 فروری2018ء) پاکستان مسلم لیگ کے صدر و سابق وزیراعظم چودھری شجاعت حسین نے کہا ہے کہ عدلیہ کو کمزور اور تنقید کا نشانہ بنانے والے احمقوں کی جنت میں رہتے ہیں، انہیں شاید یہ معلوم نہیں کہ سپریم کورٹ پارلیمنٹ کے کسی بھی فیصلے کو رد کر سکتی ہے جو آئین کے بنیادی ڈھانچے کے خلاف ہو، آئین کیا ہے اس کی تشریح اسی آئین کے مطابق سپریم کورٹ نے ہی کرنا ہوتی ہے۔

(جاری ہے)

انہوں نے ایک بیان میں کہا کہ چیف جسٹس کا بڑا پن ہے کہ وہ نااہل اور تھرڈ گریڈ کے لوگوں کی احمقانہ زبان برداشت کر رہے ہیں، نااہل افراد حد سے بڑھ رہے ہیں، یہ تو ہو نہیں سکتا کہ نوازشریف کی خواہش کی تکمیل کرتے ہوئے جاتی عمرا کے تحصیلدار کو سپریم کورٹ کا چیف جسٹس لگا دیا جائے۔