تاج محل پر سنی وقف بورڈ دعوے کے حق میں ثبوت پیش کرنے میں ناکام

تاج محل کی محکمہ آثار قدیمہ دیکھ بھال کرے،ہمیں کوئی پریشانی نہیں، نماز اور تقاریب کے اہتمام کیلئے بورڈ کا حق برقرار رہے

بدھ اپریل 18:44

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 18 اپریل2018ء) بھارت میں واقع تاج محل پر سنی وقف بورڈ دعوے کے حق میں ثبوت پیش کرنے میں ناکام رہا، تاج محل کو محکمہ آثار قدیمہ کی دیکھ بھال میں رکھنے میں کوئی پریشانی نہیں لیکن نماز اور دیگر تقاریب کے اہتمام کیلئے بورڈ کا حق برقرار رہے ۔ بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی شہر آگرہ میںواقع تاج محل کی ملکیت کا دعویٰ کرنیوالا سنی وقف بورڈ سپریم کورٹ میں اپنے دعوے کے حق میں کوئی ثبوت پیش نہ کرسکا۔

(جاری ہے)

بورڈ نے دعویداری پر نرم موقف اپناتے ہوئے کہا کہ جب کوئی جائداد وقف کردی جاتی ہے تو وہ خدا کی جائداد ہوجاتی ہے۔اس سے پہلے وقف بورڈ کا دعویٰ تھا کہ وہ تاج محل کا مالک ہے اور اس کے پاس اس کی حمایت میں دستاویزات ہیں۔ وقف بورڈ نے چیف جسٹس دیپک مشرا کی صدارت والی بنچ کے سامنے کہا کہ تاج محل کو محکمہ آثار قدیمہ کی دیکھ بھال میں رکھنے میں کوئی پریشانی نہیں لیکن نماز اور دیگر تقاریب کے اہتمام کیلئے بورڈ کا حق برقرار رہے۔ اس پر محکمہ آثار قدیمہ نے حکام سے ہدایت لینے کیلئے وقت مانگا۔اس معاملے کی سماعت 27جولائی کو ہوگی۔