پاکستان سے جانے والی گیتا کو والدین نہ ملے،

حکومت کی شادیاں کی تیاریاں 25 رشتے آچکے آرمی آفیسر، ماہر فلکیات، انجینئر، ناول نگار شامل،حتمی فیصلہ گیتا کا ہی ہوگا،وزیرخارجہ سشما سوراج

جمعہ اپریل 15:45

پاکستان سے جانے والی گیتا کو والدین نہ ملے،
نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 اپریل2018ء) پاکستان سے بھارت جانے والی لڑکی گیتا اب تک اپنے والدین سے تو نہ مل سکی مگر بھارت کو اس کے شریک حیات کی فکر لاحق ہو گئی۔۔بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج ان دنوں گیتا کے دولہا کی تلاش میں سر گرم ہیں۔۔بھارتی ٹی وی کے مطابق بھارتی وزیر خارجہ ایدھی ہوم میں پرورش پانے والی گیتا کو اپنی بیٹی کہہ کر پاکستان سے لے تو گئیں لیکن سماعت و گویائی سے محروم لڑکی کے ماں باپ کوتین سال بعد بھی ڈھونڈنے میں کامیاب نہ ہوسکیں۔

اکتوبر 2017 میںسشما سوراج نے ریاست مدھیا پردیش کے وزیر اعلی کے ساتھ بات چیت کے بعد گیتا کی شادی کی منصوبہ بندی کا اعلان کیا تھا۔۔سول سوسائٹی نے گیتا کے شوہر کی تلاش شروع کی اور وہ کامیاب بھی ہوئے جس کو وہ سشما سوراج کے گھر ملاقات کے لئے بھی لے کر گئیمگر گیتا نے اس رشتے سے انکار کر دیا تھا۔

(جاری ہے)

بھارت میں اب تک گیتا کیلئے 25افراد کے رشتے آچکے ہیں جن میں آرمی آفیسر، ماہر فلکیات، انجینئر، ناول نگار وغیرہ شامل ہیں۔

ان تمام افراد کی تفصیلات بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج کو بھیجی گئیں جس کے بعد 15 افراد کو شارٹ لسٹ کیا گیا ہے۔سشما سوراج کی پی اے کا کہنا تھا کہ دولہا کی پسند نا پسند کا فیصلہ گیتا ہی کرے گی۔ایسے افراد جو گیتا سے سرکاری نوکری کی امید میں شادی کرنے کے خواہشمند تھے، ان کی درخواستیں مسترد کردی گئیں ہیں تاہم دولہا پسند کرنے کے بعد بھارتی حکومت اسے سرکاری نوکری ، گھر اور ایک گاڑی بھی فراہم کرے گی۔