پاکستانی نوجوان سے شادی کرنے والی میری بہو کرن بالا پاکستانی خفیہ ایجنسی کی ایجنٹ تھی، سابق سسر ترسیم سنگھ کا الزام

بھارتی سیکیورٹی ایجنسیاں فیس بک اکائونٹ اور موبائل فون تفصیلات کے ذریعے واقعہ کی تہ تک جانے کی کوششوں میں مصروف ہیں ،بھارتی میڈیا

جمعہ اپریل 20:57

پاکستانی نوجوان سے شادی کرنے والی میری بہو کرن بالا پاکستانی خفیہ ایجنسی ..
چندی گڑھ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 اپریل2018ء) بھارتی شہر چندی گڑھ کی اسلام قبول کرکے پاکستانی نوجوان کے ساتھی شادی کرنے والی سکھ یاتری کرن بالا عرف آمنہ بی بی کے سابق سسر نے الزام عائد کیا ہے کہ میری بہو پاکستانی خفیہ ایجنسی کی ایجنٹ تھی۔۔بھارتی میڈیا کے مطابقہوشیار پور کی کرن بالانے تہوار منانے پاکستان کے ننکانہ صاحب پہنچنے کے بعد اچانک آمنہ بی بی بن کر سب کو حیران کردیا۔

32سالہ کرن بالا 10اپریل 2018کو پاکستان گئی تھی۔ کرن نے بچوں سے کہا تھا کہ وہ درشن کرکے جلد گھر آجائیگی۔ کرن بالا کے شوہرکی موت نومبر 2013 میں سڑ ک حادثے میں ہوگئی تھی۔کرن بیوہ ہے اور اس کے 3بچے اندر جیت ،ارجن اور گورمیت ہیں۔وہ شوہر کی موت کے بعد گم سم رہنے لگی اور اس کی دنیا موبائل میں سمٹ کر رہ گئی۔

(جاری ہے)

کرن کے سسر ترسیم سنگھ نے کہا کہ مجھے موبائل اور نیٹ چلانا نہیں آتا۔

بہو اکثر انٹر نیٹ پر مصروف رہا کرتی تھی۔ وہ کیسے اور کب پاکستانی نوجوان سے رابطے میں آئی، اس کا کوئی علم نہیں۔گھر والے جب کرن سے پوچھتے کہ وہ کہاں بات کررہی ہے تو یہ کہہ کر ٹال دیتی کہ رشتے دار سے بات کررہی ہے۔ ترسیم سنگھ نے کہا کہ مجھے شک ہے کہ وہ پاکستان کی خفیہ ایجنسی کے جال میں پھنس گئی ہے اور وہ ان کیلئے کام کررہی ہو۔فی الحال بھارتی سیکیورٹی ایجنسیاں اور پنجاب پولیس کرن بالا کے فیس بک اکا?نٹ اور موبائل فون کی تفصیلات حاصل کرکے واقعہ کی تہ تک جانے کی کوششیں کررہی ہیں۔