پاکستانی نژاد اطالوی لڑکی کی پراسرار موت،

قبر کشائی کے بعد نمونے لیبارٹری ارسال ثنا ء کی موت کے حوالے سے مقامی ڈاکٹروں کی طرف سے بھی ایک رپورٹ جاری کی جائے گی

بدھ اپریل 14:28

پاکستانی نژاد اطالوی لڑکی کی پراسرار موت،
گجرات (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 اپریل2018ء) گجرات میں قتل کی جانے والی پاکستانی نژاد اطالوی لڑکی ثنا کی موت کا معمہ حل کرنے کیلئے مقتولہ کی قبر کشائی کے بعد جسم کے اجزا فورنزک ٹیسٹ کیلئے لیبارٹری بھجوادیئے گئے۔ثنا چیمہ نامی لڑکی کو چند روز قبل مبینہ طور پر باپ، بھائی اور چچا نے غیرت کے نام پر قتل کرنے کے بعد مقامی قبرستان میں ہی دفنا دیا تھا۔

پولیس کے مطابق 18 اپریل کو گاؤں منگووال غربی میں پاکستانی نژاد اطالوی شہری 26 سالہ ثناء چیمہ کی موت کی رپورٹس سامنے آئی تھیں تاہم اہلخانہ نے اسے حادثہ قرار دے کر لڑکی کو سپرد خاک کیا۔بعدازاں سوشل میڈیا اور اطالوی میڈیا پر یہ رپورٹس سامنے آنے کے بعد کہ ثناء چیمہ کو قتل کیا گیا ،ْ ڈی پی او گجرات کے حکم پر تحقیقات شروع کی گئیں اور ایس ایچ او کی مدعیت میں مقدمہ درج کیا گیا۔

(جاری ہے)

میڈیارپورٹ کے مطابق ثنا ء کی قبر کشائی علاقہ مجسٹریٹ کی نگرانی میں کی گئی ،ْاس موقع پر پولیس کی بھاری نفری بھی موجود تھی، لاش کے اجزا ٹیسٹ کیلئے لاہور بھجوا دیئے گئے۔ثنا ء کی موت کے حوالے سے مقامی ڈاکٹروں کی طرف سے بھی ایک رپورٹ جاری کی جائے گی۔۔پولیس کے مطابق مقتولہ کے والد غلام مصطفیٰ اس کی شادی رشتے داروں میں کرنا چاہتے تھے، مگر ثناء اٹلی میں ہی پسند کی شادی کی خواہش مند تھی۔

پولیس کے مطابق غلام مصطفی نے مبینہ طور پر غیرت کے نام پر اپنے بیٹے عدنان مصطفی اور بھائی مظہر اقبال کے ساتھ مل کر اپنی بیٹی کو تشدد کر کے قتل کیا۔گجرات کے مقامی تھانے میں مقدمہ درج کرلیا گیا ہے تاہم اب تک کسی بھی ملزم کو حراست میں نہیں لیا گیا۔ واضح رہے کہ 2016 میں بھی غیرت کے نام پر قتل کا ایک ایسا ہی واقعہ پیش آیا تھا، جب برطانوی نژاد پاکستانی خاتون سامعہ شاہد کو جہلم میں غیرت کے نام پر قتل کردیا گیا تھا