سعودی عرب ، حکومت کی خاتون ریسلر کی مختصر لباس میں تشہیر پر معذرت

ویڈیو میں مختصر لباس میں ملبوس خواتین کے نازیبا مناظر شامل تھے ، سعودی جنرل اسپورٹس اتھارٹی

پیر اپریل 22:39

سعودی عرب ، حکومت کی خاتون ریسلر کی مختصر لباس میں تشہیر پر معذرت
ریاض (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 30 اپریل2018ء) سعودی عرب میں اسپورٹس حکام نے ملک میں ورلڈ ریسلنگ کی تقریب کے دوران بڑی اسکرین پر مختصر لباس میں ملبوس خواتین ریسلرز کی تشہیر پر معافی مانگ لی۔میڈیارپورٹ کے مطابق سعودی عرب کی تاریخ میں پہلی مرتبہ جدہ میں کنگ عبداللہ اسپورٹس اسٹیڈیم میں ہونے والے ورلڈ ریسلنگ ایونٹ میں بڑی تعداد میں مقامی خواتین اور بچوں نے شرکت کی تھی۔

تقریب کے دوران ایک اشتہار میں مختصر لباس میں ملبوس خاتون ریسلر کو دکھایا گیا تھا۔

(جاری ہے)

امریکی میڈیا کے مطابق مذکورہ اشتہار دیکھنے والے ناظرین کا کہنا تھا ورلڈ ریسلنگ انٹرٹینمنٹ انکارپوریشن کے ’گریٹیسٹ رائل رمبل‘ کی متنازع تصاویر سامنے آتیہی اشتہار کو کچھ دیر کیلئے بند کردیا گیا تھا۔۔۔سعودی جنرل اسپورٹس اتھارٹی نے آن لائن بیان جاری کرتے ہوئے اس واقعے پر معذرت کی۔

انہوںنے کہاکہ اس ویڈیو میں مختصر لباس میں ملبوس خواتین کے ’نازیبا‘ مناظر شامل تھے۔انہوں نے کہا کہ ہم کبھی ایسے مقابلے نہیں دکھائیں گے جس میں خواتین ریسلرز بھی موجود ہوں۔واضح رہے کہ جمعہ کو جدہ میں ہونے والے ڈبلیو ڈبلیو ای کی تقریب میں معروف ریسلر جون سینا، ٹرپل ایچ سمیت دیگر افراد نے شرکت کی تھی۔۔

متعلقہ عنوان :