دنیا بھر میں اسلام فوبیا میں بتدریج کمی واقع ہو رہی ہے۔ او آئی سی

Mian Nadeem میاں محمد ندیم جمعرات مئی 15:35

دنیا بھر میں اسلام فوبیا میں بتدریج کمی واقع ہو رہی ہے۔ او آئی سی
جدہ(اردوپوائنٹ اخبارتازہ ترین-انٹرنیشنل پریس ایجنسی۔03 مئی۔2018ء) دنیا بھر میں اسلام فوبیا میں بتدریج کمی واقع ہو رہی ہے۔اسلامی تعاون تنظیم ( او آئی سی) کے مبصرین کی سالانہ رپورٹ کے مطابق سال 2016-17ءکے مقابلے میں جولائی 2017سے اپریل 2018ءکے دوران ” اسلام فوبیا“ میں بتدریج کمی دیکھنے میں آئی ہے۔اسلام فوبیا سے چین،، میانمار اور آسٹریلیا سمیت دیگر مغربی ممالک میں بھی مسلمانوں کو مختلف مشکلات کا سامنا ہے، چار ابواب اور 104 صفحات پر مشتمل رپورٹ کو تین مختلف سرکاری زبانوں انگریزی، عربی اور فرانسیسی میں شائع کیا گیا ہے جو 5 مئی 2018ءکو بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ میں اسلامی تعاون تنظیم کے وزراءخارجہ کے 45 ویں اجلاس میں پیش کی جائے گی۔

رپورٹ میں یورپ،، امریکہ،، ہنداور جنوبی کوریا سمیت مختلف ممالک میں مقیم مسلمانوںکے ساتھ تشدد کے مختلف واقعات کے 40 فوٹو بھی شامل کئے گئے ہیں۔

(جاری ہے)

رپورٹ کے مطابق تشدد کے مختلف واقعات سے متاثر ہونے والے مسلمانوں کو بعض ممالک میں انصاف تک رسائی بھی دستیاب نہیں ہوتی۔ یہی وجہ ہے کہ اس طرح کے واقعات کے درست اعداد وشمار مرتب کرنا کافی مشکل ہے تاہم رپورٹ میں ایک مثبت پیشرفت کی جانب اشارہ کیا گیا ہے کہ عالمی سطح پر مسلمانوں کے حوالے سے پائے جانے والے تعصب ” اسلام فوبیا“ میں چاربنیادی پوائنٹس کی کمی واقع ہوئی ہے۔

جن میں سے امریکہ میں حکومت کی پالیسیوں کے خلاف عوام کا رد عمل، یورپی ممالک کے انتخابات میں مذہبی رجحانات کی حامل سیاسی جماعتوں کی شکست اور یورپ کے خطے سے مذہبی تعصب کے خاتمے کیلئے کئے جانے والے مختلف حکومتی اقدامات اور پروگرامز سمیت امریکہ اور یورپ سمیت دیگر غیر مسلم ممالک میں بین المذاہب ہم آہنگی کے فروغ کیلئے کئے جانے والے اقدامات ہیں۔

رپورٹ میں اسلام فوبیا میں کمی کے رجحانات کا تجزیہ کرنے کیلئے نیویارک ،برسلز اور جنیوا اورمختلف ممالک سمیت اقوام متحدہ میں او آئی سی کے دفاتر اور اقوام متحدہ کے ادارہ برائے تعلیم،، سائنس وثقافت (یونیسکو) کے اعداد وشمار سے مدد حاصل کی گئی ہے۔ یہ رپورٹ اسلامی تعاون تنظیم کی ساتویں سالانہ رپورٹ ہے جس میں تنظیم کے غیر رکن ممالک اور مسلمان اقلیتی آبادی کے حامل ممالک میں مسلمانوں کے حالات وواقعات کا تجزیہ کیا جاتا ہے۔

رپورٹ کے مطابق او آئی سی کے مبصرین نے اسلام فوبیا کو تین مختلف درجات میں تقسیم کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ اور کینیڈا کے علاوہ دیگر یورپی ممالک اور آسٹریلیا،، میانمار اور چین میں اس حوالے سے مختلف واقعات رونما ہوتے ہیں۔رپورٹ میں اسلام فوبیا کے حوالے سے پیش کئے جانے والے تصورات سے عالمی سطح پر کام کرنے والے مختلف اداروں، تنظیم اور پریشر گروپس کو اس میں کمی کے حوالے سے رہنمائی حاصل ہوسکتی ہے تاکہ مسلمانوں ،خواتین اور مذہبی مقامات کی بے حرمتی کے واقعات کو کم کرنے کے ساتھ ساتھ بین المذاہب ہم آہنگی کو فروغ دیا جا سکے۔