امریکی سفارتخانے کی یروشلم منتقلی،سڑکوں پر سائن بورڈز آویزاں

ابتدائی طور پر یہ ایک عبوری سفارتخانہ ہے،حتمی طور پر جگہ کا تعین کرناابھی باقی ہے،امریکہ محکمہ خارجہ

منگل مئی 15:50

تل ابیب(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 08 مئی2018ء) اسرائیلی حکام نے یروشلم میں ایسے روڈ سائنز یا راستے کی نشاندہی کرنے والے بورڈز نصب کر دیئے ہیں جو امریکی سفارتخانے کو جانے والے راستے کی جانب رہنمائی کرتے ہیں،امریکی سفارتخانہ آئندہ ہفتے تل ابیب سے یروشلم منتقل ہونا ہے۔منگل کو اس حوالے سے میئر یروشلم کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ یہ خواب نہیں حقیقت ہے،یروشلم یہودی لوگوں کا ابدی دارالحکومت ہے اور دنیا نے اس حقیقت کو تسلیم کرنا شروع کر دیا ہے۔

دوسری جانب امریکہ محکمہ خارجہ کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ ابتدائی طور پر یہ مشن ایک عبوری سفارتخانہ ہے جو ایک ایسی عمارت میں کھولا جا رہا ہے جو اس وقت یروشلم میں امریکی قونصل خانے کے تحت قائم ہے،تاہم یروشلم میں مستقل امریکی سفارتخانے کی جگہ کا تعین کیا جانا ابھی باقی ہے۔

(جاری ہے)

ترجمان اسرائیلی وزارت دفاع کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ پیراگوئے کے صدر ہوراسیو کارٹیس رواں ماہ کے اختتام تک اسرائیل آ کر اپنے ملک کے سفارتخانے کا افتتاح کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں۔

جو امریکی عبوری ایمبیسی کمپاؤنڈ جانے والے راستے کی نشاندہی کرتا ہے،یروشلم میں امریکی سفارتی مشن نے 14 مئی سے کام شروع کرنا ہے۔واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ برس دسمبر میں یہ متنازعہ اعلان کیا تھا کہ وہ یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرتے ہیں اور یہ کہ امریکی سفارتخانہ جلد ہی تل ابیب سے یروشلم منتقل کر دیا جائیگا۔۔اسرائیل نے اس امریکی فیصلے کا گرم جوشی سے خیر مقدم کیا تھا۔گوئٹے مالا بھی قبل ازیں اپنا سفارت خانہ یروشلم منتقل کرنے کا اعلان کر چکا ہے۔