لاہور ہائیکورٹ نے قصور میں عدلیہ مخالف احتجاج پر مسلم لیگ (ن) کے ایم این اے شیخ وسیم اختر، ایم پی اے نعیم صفدر سمیت 6 ملزمان پر فرد جرم عائد کر دی

جمعہ مئی 16:20

لاہور۔11 مئی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) لاہور ہائیکورٹ کے فل بینچ نے عدلیہ مخالف احتجاج اور ریلیاں نکالنے پر مسلم لیگ (ن) کے ایم این اے شیخ وسیم اختر، ایم پی اے نعیم صفدر سمیت 6 ملزمان پرفرد جرم عائد کرتے ہوئے ملزموں کو جواب داخل کرنے کیلئے سات دنوں کی مہلت دے دی۔ لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس سید مظاہر علی اکبر نقوی کی سربراہی میں تین رکنی فل بنچ نے جمعہ کو قصور میں عدلیہ مخالف احتجاج کرنے والے ارکان اسمبلی سمیت دیگر کیخلاف توہین عدالت کی درخواست پر سماعت کی۔

عدالت نے مسلم لیگ ن کے رکن قومی اسمبلی شیخ وسیم اور رکن پنجاب اسمبلی نعیم صفدر سمیت 6 ملزمان پر فرد جرم عائد کی تو ارکان اسمبلی سمیت چھ ملزمان نے صحت جرم سے انکار کیا۔ ملزمان نے کہا کہ پہلے بھی عدلیہ کا احترام کرتے تھے اور اب بھی کرتے ہیں،ان سے غلطی ہوئی ہے اور غیر دانستہ طور پر یہ اقدام ہوا، جس پر عدالت نے کہا کہ سب کچھ عدالت کے علم میں ہے،یہ کورٹ آف لاء ہے یہاں قانون کے مطابق فیصلہ ہو گا۔

(جاری ہے)

دوران سماعت درخواست گزاروں کے وکیل میاں ظفر اقبال کلانوری اور اظہر صدیق نے کہا کہ توہین عدالت کے معاملے میں رعایت دینے سے ملک میں انارکی پھیلے گی، اگر عدلیہ کے وقار کو برقرار نہ رکھا گیا تو انصاف کے ادارے پر کسی کا اعتماد نہیں رہے گا، عدالت قانون کے تحفظ کیلئے موجود ہے۔ عدالت نے توہین عدالت کی مزید کارروائی 18 مئی تک ملتوی کر دی۔