یمن، غیر متوقع سمندری طوفان کی زد میں،شدید بارشیں اور سیلاب کی آمد،تباہ حال یمنی انفراسٹکچر کو مزید نقصان کا سامنا

ہفتہ مئی 22:19

عدن(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 19 مئی2018ء) یمن غیر متوقع سمندری طوفان کی زد میں آ گیا،،یمن کی جنوبی ساحلی پٹی میں شدید بارشیں اور سیلاب متوقع ہیں،تباہ حال یمنی انفراسٹکچر کو مزید نقصان کا سامنا ہے۔ غیر ملکی میڈیا کے مطابق اقوام متحدہ نے خلیج عدن میں یمن کی جانب بڑھتے ہوئے سمندری طوفان ساگر کے حوالے سے انتباہ جاری کیا ہے۔ یمن میں سمندری طوفان کا یہ غیرمعمولی واقعہ ہے۔

(جاری ہے)

اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ اس سمندری طوفان کی وجہ سے یمن کی جنوبی ساحلی پٹی میں شدید بارشیں اور سیلاب متوقع ہیں۔ یمنی وزارت صحت کا کہنا ہے کہ طوفان کی وجہ سے جمعے کے روز ایک معمر خاتون اپنے گھر میں آگ لگنے کے سبب ہلاک ہو گئی۔ بتایا گیا ہے کہ ایک عمارت کو اس وقت خالی کرا لیا گیا، جب اس کی ایک بالکونی گر گئی۔ حکام کا کہنا ہے کہ اس سمندری طوفان کی وجہ سے متعدد علاقے زیرآب ہیں اور خانہ جنگی کی وجہ سے پہلے سے تباہ حال انفراسٹکرچر کو مزید نقصان پہنچا ہے۔