بینکاری چینل پاک روس باہمی تجارت کے لئے ضروری ہیں، سید مظہر علی ناصر

بدھ مئی 20:52

کراچی ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 23 مئی2018ء) پاکستان اور روس کی نیشنل چیمبرزآف کامرس اینڈ انڈسٹر نے اس بات پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ دو نو ں ممالک کے در میان بینکا ری چینل قا ئم کر نے سے ہی دو نو ں مما لک کے در میان تجا رتی حجم میں اضا فہ ہو سکتا ہے اور ان ٹائیپڈریو نیو کو بڑھا سکتا ہے۔ اس بات کا اتفاق ایف پی سی سی آئی کے سنیئر نائب صدر سید مظہر علی ناصر اور رشین فیڈریشن چیمبر آف کامرس کے نائب صدر سرجی کیٹ ریان کے درمیان ملاقات میں طے پایا۔

اس ملاقات میں اتفاق ہوا کہ دونوں ممالک کے درمیان موجودہ تجارتی روابط ممکنات سے کم ہیں جس کی وجہ دونوں ممالک کی بزنس کمیونٹی کے درمیان رابطہ کا فقدان ہے۔ روس کے پاس انفرا اسٹرکچر ڈیولپمنٹ، قدرتی وسائل کی وافر مقدار موجود ہے جو پاکستان کے قدرتی گیس، ریل، روڈنٹ ورک، گوشت، ڈیری پروسینگ وغیرہ کی بہتری کے لیے صلاحیتیں پاکستان کو فراہم کر سکتا ہے۔

(جاری ہے)

روس ہیوی الیکٹریکل پرزے، سب پاور اسٹیسن کی ا سمبلنگ بھی پاکستان کو فراہم کر سکتا ہے اور پاکستان ان کے عوام کی کپڑا، چاول، گارمنٹ، فارما، چمڑا کی مصنوعات کی طلب پو ری کر سکتا ہے پاکستانی اشیاء کی پو ری دنیا میں طلب ہے۔ مظہر علی ناصر نے روس کی اس مدد کو سراہا ہے کہ جو اس نے پاکستان اسٹیل ملز قائم کرنے میں اور اب اس کا جائزہ لینے کے لئے بھی مدد کر سکتا ہے۔

انہوں نے کہاکہ پاکستان اور روس کے درمیان کارگو اور تاجروں کو سہولت کیلئے متواتر فلائٹ ہونی چاہیے۔ اجلاس کے دوران مظر نا صرنے دونوں ممالک کے در میان باہمی تجارت میں رکاوٹوں پر بھی نظر ثانی کی گئی اور ان کی سفارش پر دونوں ممالک متفق ہوئے کہ وہ کسٹم کے مسائل کو حل کرنا چاہئے تا کہ دو نو ں ممالک کے تاجروں کو فائد ہ ہو۔ دونوں ممالک کے درمیان جو ائنٹ بز نس کو نسل کے معاہدات پر ما ضی میں جو دستخط ہو ئے تھے اُس پر عمل کر نے پر زور دیا ۔

اور دو نو ں ممالک کے در میان انفار میشن کی فیلڈ میں با ہمی تعلقا ت ، تجا رتی وفد کے تبا دلے اور ویز ا کے مسا ئل پر بھی بحث ہو ئی ۔ مظہر علی نا صر نے کہاکہ دو نو ں ممالک تجا رت کو بڑھانے میں جو حائل مشکلا ت انہیں دور ہونا چا ہیے اور دو نو ںممالک کے نجی شعبا جا ت کو چا ہیے کہ وہ اس سلسلے میں با ہمی کو شش کر یں تا کہ با ہمی تعلقا ت میں اضا فہ ہو ور ہر سطح پر آنے والی فوائد کو بھی مد نظر رکھا جا ئے گا ۔ میٹنگ میں سیکر یٹر ی جنرل ایف پی سی سی آئی ڈاکٹر اقبا ل تھہیم ، نا صر حمید ٹر یڈ منسٹر ایمبیسی آف پاکستان اور نا ئب صدر رشین فیڈریشن آف چیمبرز آف کامرس نے بھی شر کت کی۔