گگو منڈی:جنسی درندے نے والدہ اور خالہ کے بعد معصوم بچی کو بھی نہ بخشا

12سالہ بچی سے مبینہ زیادتی کی کوشش ۔نا کامی پر تشدد کا نشانہ بنا ڈالا

جمعرات مئی 19:10

گگو منڈی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 24 مئی2018ء) جنسی درندے نے والدہ اور خالہ کے بعد معصوم بچی کو بھی نہ بخشا ۔12سالہ بچی سے مبینہ زیادتی کی کوشش ۔نا کامی پر تشدد کا نشانہ بنا ڈالا ۔ملزم بد کاری کا اڈا چلاتا ہے ۔متاثرہ بچی کے لواحقین کا الزام ۔گگو منڈی کے نواحی گائوں 187۔ای۔ بی کے محنت کش فیاض چوہان نے اپنی بھانجی 12سالہ رمشا کے ہمراہ صحافیوں کو بتایا کہ اس کی بہن ارشاد بی بی کی شادی لیاقت علی کے ساتھ ہوئی تھی جس کی ایک بچی رمشا جس کی عمر 12سال ہے ۔

میاں بیوی میں ناچاقی کے بعد ارشاد بی بی نے طلاق لے لی اور چک نمبر 187۔ای ۔ بی کے رہائشی مرزا محمد حسین عرف فوجی نے میری بہن سے نا جائز تعلقات استوار کر لیے اور کچھ عرصہ بعد میری دوسری ہمشیرہ میناں بی بی کو ورغلا کر اپنے ساتھ لے گیا اور میری دونوں بہنوں کی عصمت دری کرنے کے ساتھ ساتھ بد کاری کا اڈا بھی چلانا شروع کر دیا ۔

(جاری ہے)

گزشتہ روز ارشاد بی بی کی بیٹی رمشا گھر میں اکیلی تھی کہ محمد حسین ملزم نے اس سے زبر دستی زیادتی کی کوشش کی بچی کے انکار و شور مچانے پر ملزم نے اس کا گلہ دبا دیا اور اس کے جسم پر آ ہنی راڈ برسائے ۔

چیخ و پکار پر اہلیان محلہ نے آ کر بچی کی جان بچائی ۔متاثرہ بچی رمشا نے کہا کہ ملزم قبل ازیں میرے ساتھ نا زیبا حرکات بھی کرتا تھا جس پر میں نے اپنی والدہ کو بھی بتایا تھا لیکن والدہ نے کوئی نوٹس نہ لیا ۔متاثرہ بچی رمشا نے چیف جسٹس آ ف پاکستان اور اعلیٰ حکومتی حکام سے اپیل کی ہے کہ انہیں انصاف اور تحفظ فراہم کیا جائے ۔بچی کے ماموں محمد فیاض نے بتایا کہ اس نے وقوعہ کی بابت مقامی پولیس اسٹیشن میں تحریری درخواست دی ہے تا ہم ابھی تک کوئی کاروائی نہیں ہوئی ۔