عراق میں داعش نے ایک ہی خاندان کے 12 افراد موت کے گھاٹ اتار دئیے

مقتولین میں خواتین اور بچے بھی شامل، واقعہ شمالی بغداد میں الفرحاتیہ کے مقام پر پیش آیا

اتوار جون 13:00

بغداد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 جون2018ء) عراق میں شدت پسند گروپ داعش کے جنگجوں نے اپنی روایتی سفاکیت کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایک ہی خاندان کئے کم سے کم 12 افراد کو موت کی نیند سلا دیا۔ مقتولین میں خواتین اور بچے بھی موجود ہیں۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق صلاح الدین گورنری کے ڈپٹی گورنر عمار حکمت نے بتایا کہ یہ واقعہ شمالی بغداد میں الفرحاتیہ کے مقام پر پیش آیا۔

(جاری ہے)

فی الحال یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ آیا داعشی دہشت گردوں نے پورے خاندان کو اجتماعی طورپر قتل کیوں کیا ہے۔خیال رہے کہ عراقی فوج کا دعوی ہے کہ اس نے داعش کے جنگجوں کے خلاف آپریشن کلین سویپ مکمل کرکے ملک سے داعش کا خاتمہ کردی ہے تاہم داعشی جنگجو اب بھی وقفے وقفے سے حملے کرتے رہتے ہیں۔عراقی انٹیلی جنس کے ایک عہدیدار نے بتایا کہ وہ ابھی یہ تصدیق نہیں کرسکتے کہ آیا مقتول خاندان کسی پولیس افسر کا ہے تاہم صلاح الدین اور دیگر صحرائی علاقوں میں داعش کے دہشت گردوں کی موجودگی کی اطلاعات آتی رہی ہیں جو اس علاقے میں چھپ کر دہشت گردی کی کارروائیاں کرتے ہیں۔