کوئٹہ،کوئلے کی کان بیٹھنے سی17 مزدور دب گئے،3 مزدور اور ایک رضاکار جاں بحق، 14 مزدورںکو بچا لیا گیا،12رضاکاروں کو بیہوشی کی حالت میں ہسپتال منتقل ، چند ہفتوں کے دوران کان بیٹھنے کا تیسرا واقعہ

جاں بحق ہونیوالوں میں سے ایک کا تعلق مستونگ اور تین کا خیبر پختونخوا سے ہے

اتوار جون 21:00

کوئٹہ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 جون2018ء) کوئٹہ،،کوئلے کی کان بیٹھنے سی17 مزدور دب گئے،3 مزدور اور ایک رضاکار جاں بحق،، 14 مزدورںکو بچا لیا گیا،12رضاکاروں کو بیہوشی کی حالت میں ہسپتال منتقل کر دیا گیا، چند ہفتوں کے دوران کان بیٹھنے کا تیسرا واقعہ،،جاں بحق ہونیوالوں میں سے ایک کا تعلق مستونگ اور تین کا خیبر پختونخوا سے ہے۔

(جاری ہے)

تفصیلا ت کے مطابق اتوار کو بلوچستان کے درالحکومت کوئٹہ کے علاقے سنجدی میں کوئلے کی کان بیٹھنے سے 3 مزدور اور ایک رضاکار جاں بحق ،تمام افراد کی لاشیں نکال لی گئیں،،کوئٹہ میں کوئلے کی کانیں زندگیاں نگلنے لگیں، چند ہفتوں کے دوران کان بیٹھنے کا تیسرا واقعہ، سنجدی میں کوئلے کی کان اچانک بیٹھ گئی جس سی17 مزدور دب گئے،ریسکیو آپریشن کے دوران تین مزدوروں اور ایک رضاکار کی لاشیں نکال لی گئیں جبکہ 14 کو بچا لیا گیا، بارہ رضاکاروں کو بیہوشی کی حالت میں ہسپتال منتقل کر دیا گیا،،جاں بحق ہونے والوں میں سے ایک کا تعلق مستونگ اور تین کا خیبر پختونخوا سے ہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ ماہ بھی کوئٹہ کے دو مختلف علاقوں مارواڑ اور سپین کاریز میں کوئلے کی کان بیٹھنے کے واقعات پیش آئے تھے۔ دونوں حادثات میں مجموعی طور پر 18 مزدور جاں بحق ہوئے تھے۔

متعلقہ عنوان :