نیب کسی سے ذاتی اور سیاسی انتقام پر یقین رکھتا ہے نہ ہی نیب کا الیکشن سے کوئی تعلق ہے ، جاوید اقبال

اتوار جون 22:40

؁اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 جون2018ء) قومی احتساب بیورو کے چئیرمین جسٹس(ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ انہوں نے 10اکتوبر 2017 کو اپنے منصب کی ذمہ داریاں سبھالنے کے بعدنیب کی کارکردگی کو مزید بہتر بنانے کے لیے کسی دبائو اور سفارش کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے خلوص اور نیک نیتی کے ساتھ نیب میں جہاں صرف کام اور کام کے کلچر کو فروغ دیا وہاں نیب افسران/ اہلکاروںکو اپنے کا م کی رفتار چئیر مین نیب کے کا م کی رفتار کے مطابق بڑھانے کی ہدایت کی تاکہ پاکستان سے بدعنوانی کے خاتمہ کیلئے عملی اقدامات اٹھائے جائیں۔

اجلاس میں بتایا گیا کہ چئیر مین نیب کی عملی کاوشوں اور احتساب ’’ سب کیلئے‘‘ کی پالیسی کے تحت اب تک مختصر عرصہ میں نیب نے 10اکتوبر 2017کے بعد 300افراد کو گرفتار کیا ہے جبکہ 71شکایات کی جانچ پڑتال، 44انکوائریوں، 34انوسٹی گیشنز کی قانون، میرٹ اور شواہد کو مد نظر رکھتے ہوئے منظوری دی جن پر قانون کے مطابق کام جاری ہے۔

(جاری ہے)

نیب نے مختصر وقت میں بدعنوانی کے 240ریفرنس متعلقہ احتساب عدالتوں میں نہ صرف دائر کیے بلکہ 35ملزمان کو متعلقہ معزز احتساب عدالتوں نے قانون مطابق سزادی جو کہ نیب کی مختصر وقت میں شاندار کار کردگی کی عکاسی کرتا ہے۔

چئیرمین نیب نے کہا کہ نیب کسی سے ذاتی اور سیاسی انتقام پر یقین نہیں رکھتا اور نہ ہی نیب کا الیکشن سے کوئی تعلق ہے ۔ نیب ایک آئینی ادارہ ہے جس کے افسران قانون اور قواعد کے کے مطابق اپنے فرائض سرانجام دے رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہم کرپشن فری پاکستان کے لیے پر عزم ہیں۔ ہمارے ارادے پختہ اور بدعنوانی کا خاتمہ نہ صرف نیب بلکہ پوری قوم کی آواز ہے۔ چئیرمین نیب نے کہا کہ ہم سب ملکر اپنے پیارے وطن پاکستان کو بدعنوانی سے پاک کرنے میں کامیاب ہو جائیں گے۔