زلفی بخاری نے صرف ایک دفعہ بیرون ملک جانے کی اجازت مانگی تھی، نگراں وزیر داخلہ

زلفی بخاری نے وطن واپس آنے کا بیان حلفی دیا تھا،میں نے زلفی کی فائل دیکھی اور چھ روز کے لئے جانے کی اجازت دی اور لکھا کہ اس کو واپس آنا ہو گا، مجھے عمران خان سمیت کسی نے کوئی فون نہیں کیا نگراں وزیر داخلہ اعظم خان کی قائمہ کمیٹی داخلہ کو بریفنگ

جمعرات جون 13:19

زلفی بخاری نے صرف ایک دفعہ بیرون ملک جانے کی اجازت مانگی تھی، نگراں ..
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 21 جون2018ء) نگراں وزیر داخلہ اعظم خان نے کہا ہے کہ زلفی بخاری نے صرف ایک دفعہ بیرون ملک جانے کی اجازت مانگی تھی،زلفی بخاری نے وطن واپس آنے کا بیان حلفی دیا تھا،میں نے زلفی کی فائل دیکھی اور چھ روز کے لئے جانے کی اجازت دی اور لکھا کہ اس کو واپس آنا ہو گا، مجھے عمران خان سمیت کسی نے کوئی فون نہیں کیا۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹر رحمان ملک کی زیر صدارت قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کا اجلاس ہوا۔ نگراں وزیر داخلہ نے عمران خان کے دوست زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالنے اور بیرون ملک جانے کی اجازت دینے کے معاملے پر بریفنگ دی۔اعظم خان نے بتایا کہ سیکرٹری داخلہ فائل لے کر آئے اور کہا کہ زلفی بخاری عمران کے ساتھ عمرے کے لئے جا رہے ہیں، لیکن ان کا نام بلیک لسٹ میں ہے اس لیے ان کو روک لیا گیا ہے، زلفی بخاری نے بلیک لسٹ سے نام نکالنے کی درخواست دی اور بیان حلفی دیا کہ وہ واپس آئیں گے، انہوں نے ایک دفعہ بیرون ملک جانے کی اجازت مانگی، میں نے زلفی کی فائل دیکھی اور چھ روز کے لئے جانے کی اجازت دی اور لکھا کہ اس کو واپس آنا ہو گا۔

(جاری ہے)

نگراں وزیر داخلہ نے کہا کہ مجھے عمران خان سمیت کسی نے کوئی فون نہیں کیا، زلفی بخاری کے خلاف نیب میں آف شور کمپنیوں کا کیس ہے اور نیب نے ہی ان کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کی درخواست کی تھی، کابینہ کمیٹی نہ ہونے کے باعث زلفی کا نام بلیک لسٹ میں ڈالا گیا تھا تاکہ وہ ملک سے فرار نہ ہوسکیں۔

متعلقہ عنوان :