ن لیگ نے اسکندر بوسن کو ٹکٹ دینے کی پیش کش کردی

تحریک انصاف نے سابق وفاقی وزیر کو دیے جانا والا ٹکٹ واپس لے کر متبادل امیدوار کو ٹکٹ سے نواز دیا

muhammad ali محمد علی بدھ جون 21:15

ن لیگ نے اسکندر بوسن کو ٹکٹ دینے کی پیش کش کردی
ملتان (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 26 جون2018ء) ن لیگ نے اسکندر بوسن کو ٹکٹ دینے کی پیش کش کردی ہے، جبکہ تحریک انصاف نے سابق وفاقی وزیر کو دیے جانا والا ٹکٹ واپس لے کر متبادل امیدوار کو ٹکٹ سے نواز دیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق تحریک انصاف نے سکندر بوسن اور مزید دو امیدواروں سے پارٹی ٹکٹ واپس لے لیے ہیں۔ تحریک انصاف کی جانب سے جاری کردہ امیدواروں کی فہرست میں چوہدری محمد الیاس اور محمد زبیر کے نام خارج ہیں۔

پی ٹی آئی نے گجرات کے حلقہ این اے 71 سے چوہدری محمد الیاس اور صوبائی اسمبلی کی نشست پی پی 28 گجرات ون سے محمد زبیر کو ٹکٹ جاری کیا گیا تھا جو واپس لے لیا گیا۔ چوہدری محمد الیاس تحریک انصاف کے سابق ضلعی صدر رہ چکے ہیں اور وہ 2013 کے عام انتخابات میں پارٹی کے امیدوار بھی تھے۔

(جاری ہے)

یاد رہے کہ اس سے قبل کارکنان کے شدید احتجاج پر تحریک انصاف کی قیادت نے ملتان کے حلقہ این اے 157 سے سکندر بوسن کو جاری کردہ ٹکٹ واپس لے لیا تھا۔

سکندر بوسن حال ہی میں مسلم لیگ (ن) چھوڑ کر تحریک انصاف میں شامل ہوئے ہیں جنہیں ملتان سے پارٹی ٹکٹ دیا گیا تھا جس پر کارکنان نے عمران خان کی رہائش گاہ کے باہر شدید احتجاج کیا۔پی ٹی آئی کارکنان کا مؤقف تھا کہ سکندر بوسن پارٹی سے مخلص نہیں اور وہ جماعتیں بدلتے رہتے ہیں، اس لیے انہیں ٹکٹ جاری کر کے مقامی قیادت کی حق تلفی کی گئی۔

واضح رہے کہ 25 جولائی کو ہونے والے عام انتخابات کیلئے تیاریاں آخری مراحل میں داخل ہوچکی ہیں اور سیاسی جماعتوں نے باقاعدہ انتخابی مہم کا بھی آغاز کردیا ہے۔ دوسری جانب اس صورتحال سے فائدہ اٹھاتے ہوئے ن لیگ نے اسکندر بوسن کو بڑی پیش کش کردی ہے۔ ن لیگ کی جانب سے اسکندر بوسن کو دوبارہ ٹکٹ دینے کی پیش کش کی گئی ہے۔ تاہم اسکندر بوسن نے تاحال اس پیش کش پر کوئی ردعمل نہیں دیا۔