وزیراعظم عمران خان نے زیر زمین پانی کی بحالی اور ری چارج کرنے کی غرض سے مجوزہ منصوبے’’ری۔چارج پاکستان‘‘ کی منظوری دیدی

موسمیاتی مسائل پر قابو پانا حکومت ی ترجیح ہے، ’’پاکستان صفائی مہم‘‘ اگلے ماہ سے شروع کی جائے گی ، تمام صوبائی حکومتیں اور معاشرے کے تمام طبقہ حصہ لیں گے وزیراعظم عمران خان کا وزارت موسمیاتی تبدیلی کی کارکردگی سے متعلق بریفنگ کی صدارت کے دوران اظہارخیال

منگل ستمبر 22:46

وزیراعظم عمران خان نے زیر زمین پانی کی بحالی اور ری چارج کرنے کی غرض ..
اسلام آباد ۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 25 ستمبر2018ء) وزیراعظم عمران خان نے زیر زمین پانی کی بحالی اور ری چارج کرنے کی غرض سے سیلابی پانی کے بہتر مینجمنٹ اور استعمال کیلئے مجوزہ منصوبے’’ری۔چارج پاکستان‘‘ کی منظوری دیدی اور کہا ہے کہ موسمیاتی مسائل پر قابو پانا حکومت کی ترجیح ہے، ’’پاکستان صفائی مہم‘‘ اگلے ماہ سے شروع کی جائے گی جس میں تمام صوبائی حکومتیں اور معاشرے کے تمام طبقہ فعال حصہ لیں گے۔

یہ بات انہوں نے منگل کو وزیراعظم آفس میں وزارت موسمیاتی تبدیلی کی کارکردگی سے متعلق بریفنگ کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ وزیراعظم کے مشیر ملک امین اسلم خان، سیکرٹری موسمیاتی تبدیلی خضر حیات خان اور سینئر حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔ مشیر نے وزیراعظم کو وزارت کے مینڈیٹ اور ہوا، پانی اور پلاسٹک ویسٹ آلودگی کا جائزہ لینے اور روک تھام سمیت موسمیاتی تبدیلی سے متعلق مسائل پر قابو پانے کے حوالے سے کئے گئے مختلف اقدامات کے بارے میں بریفنگ دی۔

(جاری ہے)

وزیراعظم کو بتایا گیا کہ 10 ارب ٹری سونامی منصوبے پر عملدرآمد کے علاوہ متبادل توانائی کو فروغ دینے پر بھی توجہ دی جا رہی ہے جو موسمیاتی مسائل پر قابو پانے کی حکمت عملی کا حصہ ہے۔ مشیر وزیراعظم نے کہا کہ گلیشیئل لیک آئوٹ برسٹ فلڈ (جی ایل او ایف) منصوبہ کے تحت 50 ارلی وارننگ سسٹم اور 408 ریور ڈسچارج گیجز/سینسرز گلگت بلتستان اور خیبرپختونخوا کے پانچ اضلاع میں انسٹال کرنے کا منصوبہ ہے۔

وزیراعظم کو آگاہ کیا گیا کہ ایکو۔ٹورازم پالیسی کو ترقی دینے کے علاوہ نیشنل وائلڈ لائف پالیسی کو بھی حتمی شکل دینے کیلئے کوششیں جاری ہیں۔ اس کے علاوہ گلگت بلتستان میں دو نئے نیشنل پارکس قائم کرنے کا بھی جلد اعلان کیا جائے گا۔ وزیراعظم عمران خان نے زیر زمین پانی کی بحالی اور ری چارج کرنے کی غرض سے سیلابی پانی کی بہتر منیجمنٹ اور استعمال کیلئے مجوزہ منصوبے ’’ری۔

چارج پاکستان‘‘ کی اصولی منظوری دیدی۔ بریفنگ کے دوران ہوا، پانی اور پلاسٹک ویسٹ آلودگی پر قابو پانے کیلئے مختلف اقدامات کی بھی نشاندہی کی گئی۔ وزیراعظم نے اس موقع پر کہا کہ موسمیاتی مسائل پر قابو پانا حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے اور کہا کہ ’’پاکستان صفائی مہم‘‘ اگلے ماہ شروع ہو گی جس میں صوبائی حکومتیں اور معاشرہ کے تمام طبقات فعال حصہ لیں گے۔ اس مہم کا مقصد ملک بھر میں صفائی کے حوالہ سے آگاہی پھیلانا ہے۔ انہوں نے وزارت موسمیاتی تبدیلی کو ہدایت کی کہ وہ صفائی کی اس مہم میں متحرک کردار ادا کرے۔ وزیراعظم نے وزارت موسمیاتی تبدیلی اور صوبائی حکومتوں کے درمیان اس حوالہ سے تعاون کی ضرورت پر بھی زور دیا۔