پاکستان میں ایک کروڑ سے زائد لڑکیاں شادیوں کے انتظار میں ،دس لاکھ کی شادی کی عمر گزر چکی

تنہا رہ جانے والی بیوائیں 60 لاکھ کی تعداد میں موجود ، روزانہ فیملی عدالتوں میں 25 سے 30 تنسیخ نکاح کے دعوے دائر ہو رہے ہیں ، یونیسف رپورٹ

منگل اکتوبر 23:44

پاکستان میں ایک کروڑ سے زائد لڑکیاں شادیوں کے انتظار میں ،دس لاکھ کی ..
سیالکوٹ(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 20 اکتوبر2020ء) یونیسف کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اس وقت پاکستان میں 1کروڑ سے زائد لڑکیاں ہیں ،جنکی عمر 20 سے 35 سال تک کی ہے،شادیوں کے انتظار میں ہے۔ان میں سے 10 لاکھ لڑکیوں کی شادی کی عمر گزر چکی ہے۔تنہا رہ جانے والی، بیوائیں جن کی عمریں 30 سے 45 سال کی ہیں۔

(جاری ہے)

وہ بھی تقریبا 60 لاکھ کے تعداد میں موجود ہے ہیں.اس کا مطلب یہ کہ یہ وہ بیوائیں ہیں جن کی دوسری شادی ناممکن ہے۔

ایک جانب لوگوں کو اپنی بیٹیوں کو شادی کرنے کے لئے رشتے نہیں ملتے اگر رشتہ مل جائے اور شوہر بیوی میں چھوٹی بات پر ناچاقی پیدا ہو جائے تو بیوی فوری طور پر فیملی عدالت میں تنسیخ نکاح کا دعوی دائر کر کے طلاق حاصل کر لیتی ہے اور روزانہ فیملی عدالتوں میں 25 سے 30 تنسیخ نکاح کے دعوی دائر ہو رہے ہیں یہ بھی ایک لمحہ فکریہ ہے۔