السلواڈور کے سابق صدر نے ملک بدری سے بچنے کے لیے نکاراگوواکی شہریت حاصل کرلی

اتوار 1 اگست 2021 14:50

السلواڈور کے سابق صدر نے ملک بدری سے بچنے کے لیے نکاراگوواکی شہریت ..
سان سلواڈر(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 01 اگست2021ء) وسطی امریکی ملک السلواڈور کے سابق صدر نے نکاراگووا کی شہریت حاصل کر لی ہے۔ ایسا کرنے سے انہوں نے ملک بدری کے خدشے سے نجات حاصل کر لی ہے۔السلواڈور کے سابق صدر سانچیز سیرین کے لاطینی امریکی ملک نکاراگووا کی شہریت اختیار کرنے کا باضابطہ نوٹیفیکیشن جاری کر دیا گیا ہے۔ ان کا نام ملکی گزٹ میں بھی اب شامل کر دیا گیا ہے۔

اس نئی پیش رفت کے بعد اب السلوڈور کے سابق صدر کو ملک بدر نہیں کیا جا سکے گا۔ ان کے سابقہ ملک نے ان کی گرفتاری کے وارنٹ قریب ایک ہفتہ قبل جاری کیے تھے۔میڈیارپورٹس کے مطابق السلواڈور کی حکومت نے سابق صدر سیرین پر منی لانڈرنگ اور مالی غبن کے ساتھ ساتھ ذاتی اثاثوں میں غیر معمولی اضافہ کرنے کے الزامات عائد کر رکھے ہیں۔

(جاری ہے)

انہی الزامات کے تحت سابقہ ملک کے دارالحکومت سان سلواڈور سے دفترِ استغاثہ نے ان کی گرفتاری کے وارنٹ جاری کر رکھے ہیں۔

سانچیز سیرین جنوبی امریکی براعظم کے ملک السلواڈور کے پینتالیسویں صدر تھے۔ ان کی مدت صدارت پہلی جون سن 2014 سے لے کر پہلی جون سن 2019 تک تھی۔ انہوں نے بائیں بازو کی سیاسی جماعت نیشنل لبریشن فرنٹ کے امیدوار کی حیثیت میں صدارتی الیکشن جیتا تھا۔ وہ ملکی خانہ جنگی کے دوران ایک گوریلا لیڈر بھی رہے تھے۔سن 2019 میں کاروباری شخصیت نائب بوکیلے نے صدارتی الیکشن جیت کر منصبِ صدارت سنبھالا اور جلد ہی انہوں نے سابقہ حکومتوں میں کی جانے والی کرپشن کے خلاف تفتیش کا سلسلہ شروع کر دیا۔

اسی تفتیشی عمل کے دوران سابق صدر سانچیز سیرین سن 2020 کے مہینے دسمبر میں ممکنہ گرفتاری کے خدشے کا احساس کرتے ہوئے ملک چھوڑ کر نکاراگووا چلے گئے اور پھر واپس لوٹ کر نہیں آئے۔بوکیلے نے کچھ عرصہ قبل ایک مسودہ قانون پارلیمنٹ سے منظور کروایا ہے کہ سابقہ حکومتوں میں کی جانے والی کرپشن کی مکمل تفتیش کی جائے گی اور بدعنوانی کا ارتکاب کرنے والے افراد کو انصاف کے کٹہرے میں کھڑا کیا جائے گا۔

صدر بوکیلے نے حال ہی میں انسداد بدعنوانی کے ایک قانون کی منظوری کے بعد ٹویٹ کیا تھا کہ اگر کوئی بدعنوان ہے تو وہ پھر سکون کی نیند نہیں سو پائے گا۔رواں ماہ کے اوائل میں تفتیش کاروں نے دائیں بازو کی سیاسی جماعت کے صدر دفتر پر چھاپہ مار کر وہ رقوم ضبط کر لی، جس کے بارے میں کہا گیا کہ یہ غبن سے جمع کی گئی تھی۔